حسن نصر اللہ نے دس سال قبل کہا:

امریکہ اسرائیل کو بھی اپنے مستقبل کی بھینٹ چڑھا سکتا ہے

امریکہ اسرائیل کو بھی اپنے مستقبل کی بھینٹ چڑھا سکتا ہے

سید حسن نصر اللہ نے کہا کہ یہ درست نہیں ہے کہ امریکہ کی قسمت اسرائیل سے وابستہ ہے بلکہ امریکہ کے نزدیک اسرائیل کی حیثیت ایک آلہ کار کی ہے اور اس کا ایک expiry date ہے۔

اہل البیت(ع) نیوز ایجنسی ـ ابنا ـ کے مطابق جامعہ کے ایرانی استاد ڈاکٹر وحید یامین پور نے اپنے گوگل پلس اکاؤنٹ پر لکھا: ہم میں سے بہت سوں کا خیال ہے کہ امریکہ کی باگ ڈور اسرائیل کے ہاتھ میں ہو یا الفاظ دیگر اسرائیل اور امریکہ کی قسمت ہمیشہ ایک دوسرے سے جُڑی ہوئی ہے۔ ہم دس سال پہلے سید حسن نصر اللہ کی خدمت میں حاضر ہوئے تو ہم نے اسی ذہنیت کے ساتھ ان سے اسرائیل کے ساتھ لڑنے کے انجام کے بارے میں پوچھا اور سید حسن نصر اللہ نے نہایت دلچسپ جواب دیا۔ انھوں نے کہا: یہ مت سمجھیں کہ امریکہ ہر حالت میں اسرائیل کو اس علاقے میں تحفظ فراہم کرے گا۔ اسرائیل کا بھی امریکہ کے نزدیک ایک اختتام اور اختتام کی ایک تاریخ ہے۔ اسرائیل کو اس کی اپنی حیثیت سے بڑھ کر نہ سمجھیں؛ امریکہ اپنا کھیل تبدیل کرسکتا ہے اور ایک نیا کھیل شروع کرسکتا ہے؛ پس اگر اسرائیل کے تحفظ کے اخراجات اس حد تک پہنچیں کہ وہ امریکہ کی دوسری پالیسیوں پر اثر انداز ہونا شروع ہوجائے تو اسرائیل کے سلسلے میں اپنی پالیسی بدل دے گا اور اس کو اپنے مستقبل پر قربان کرے گا۔ ڈاکٹر یامین پور کہتے ہیں: اس وقت سید کا یہ جواب ہمارے لئے بہت زیادہ قابل فہم نہ تھا لیکن اب دس سال کے بعد ظاہراً سید کی اس پیشنگوئی کے امکانات روشن ہورہے ہیں۔ مزاحمت لائن نے اس قدر اسرائیل کی حمایت کے اخراجات امریکہ کے لئے بڑھا دیئے ہیں کہ اب امریکہ کا کھیل علاقے میں بنیادی تبدیلیوں سے دوچار ہوتا ہوا دکھائی دے رہا ہے۔ ترکی کے سیاسی طرز عمل کو اسی تناظر میں دیکھا جاسکتا ہے۔ یامین پور کی آرزو اور ہر مسلمان کی خواہش: اسرائیل جانے والا ہے ۔۔۔ حتمی طور پر ۔۔۔ اور امریکہ بھی۔ ان شاء اللہ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔/٭۔٭

سید حسن نصراللہ: شام میں ایک عظیم تاریخی فتح کی عنقریب