آیت اللہ العظمی مکارم شیرازی:

عنقریب بہت سے گروہ اسلام کے دامن میں پناہ لینے والے ہیں

آیت اللہ مکارم شیرازی نے کہا: اسلام دشمن قوتیں ہرگز اس آسمانی دین کے فروغ کا راستہ نہیں روک سکیں گی اور عنقریب بہت سے گروہ اسلام کے دامن میں پناہ لینے آنے والے ہیں۔

اہل البیت (ع) نیوز ایجنسی ـ ابنا ـ کی رپورٹ کے مطابق آیت اللہ العظمی مکارم شیرازی نے پیر کے روز لاطینی امریکہ کے شیعہ مفکرین اور دانشوروں سے خطاب کرتے ہوئے اسلام کے صدر اول کے حالات کی طرف اشارہ کیا اور صدر اول کا عصر حاضر سے موازنہ کرتے ہوئے کہا: صدر اول میں دشمن قوتیں اسلام کے فروغ کی اجازت نہیں دیتی تھیں اور آج بھی وہی صورت حال ہے؛ ہمارے آج کے حالات دنیائے اسلام کے ابتدائی ایام کی مانند ہیں اور اسلام کے ان ہی دشمنوں کی آج کی نسل اسلام کے مد مقابل کھڑی ہے اور اسلام کے فروغ کی راہ میں رکاوٹیں ڈال رہی ہے۔انھوں نے کہا: دشمن قوتیں طلوع اسلام کے وقت اسلام کے فروغ و پیشرفت کے سامنے نہیں ڈٹ سکے مگر انھوں نے 14 صدیاں گذرنے کے باوجود اپنی سازشوں سے ہاتھ نہیں کھینچا ہے تا ہم وہ پھر بھی شکست کھائیں گے۔انھوں نے دنیا میں رونما ہونے والے واقعات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا: واقعات و حوادث اور ان واقعات کے تجزیوں سے ظاہر ہوتا ہے کہ اسلام مسلسل فروغ پارہا ہے اور مستقبل قریب میں زیادہ سے زیادہ گروہ اسلام قبول کرنے والے ہیں۔ حوزہ علمیہ قم کے درس خارج کے اس بلند پایہ استاد نے موجودہ حالات میں مسلمانوں کے فرائض کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا: اسلام کی صحیح شناخت، اسلام کے احکام پر عملدرآمد اور اس کے فرامین کی تعمیل، اور اسلامی تعلیمات اور مکتب اہل بیت (ع) کے معارف کی ترویج مسلمانوں کے بنیادی فرائض ہیں اور مسلمانوں کو ان فرائض کی طرف توجہ دینی چاہئے۔ اور اگر آج ہم ان تین فرائض پر عملدرآمد نہ کریں اور موجودہ مواقع ہمارے ہاتھ سے نکل جائیں تو ہم سب اللہ کی بارگاہ میں جوابدہ ہونگے۔ انھوں نے اخلاص اور محبت پر مبنی طرز سلوک کو بہت ہی اہم قرار دیا اور کہا: ہمیں امید ہے کہ آپ ـ جو تازہ مسلمان ہوگئے ہیں ـ اخلاص اور محبت آمیز رویہ اپنا کر لوگوں کو اسلام کی دعوت دے سکیں۔


All Content by AhlulBayt (a.s.) News Agency - ABNA is licensed under a Creative Commons Attribution 4.0 International License