آیت اللہ بہجت کی طرف سے رہبر معظم کے لئے ختم صلوات

آیت اللہ بہجت نے آیت اللہ العظمی خامنہ ای کے رہبر کے عنوان سے انقلاب اسلامی کی باگ ڈور سنبھالنے سے کئی برس پہلی آپ کی قیادت و رہبری کی پیشین گوئی کی تھی.

حال ہی میں مرحوم عارف پارسا اور عالم عامل، مرجع تقلید حضرت آیت اللہ محمد تقی بہجت کے فرزند نے اپنے والد مرحوم کی عمر کے آخری ایام اور آخری لمحوں کے حوالے سے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ میرے والد کی عمر کے آخری ایام میں ہی رہبر انقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ العظمی سیدعلی خامنہ ای صوبہ کردستان کے دورے پر تھے اور حضرت آیت اللہ بہجت اپنی روحانی کیفیات کے پیش نظر رہبر معظم کی صحت و سلامتی کے سلسلے میں فکرمند تھے چنانچہ والد مرحوم نے ایک مخصوص ختم صلوات کا فیصلہ کیا اور مسلسل ذکر و صلوات میں مصروف ہوئے اور اس ختم کا تسلسل رہبر کی سلامتی کی نیت سے تھا. اور ورد و ذکر کا یہ سلسلہ مرحوم والد کی عمر کے آخری لمحوں تک جاری رہا.

اس سے قبل بھی مرحوم آیت اللہ العظمی بہجت نے اپنے قریبی حلقوں، شاگردوں اور دوستوں کے درمیان ولی امر مسلمین سے اپنی دلی محبت و تعلق کا بارہا اظہار فرمایا تھا حتی کہ آیت اللہ بہجت کے کئی قریبی شخصیات نے کہا ہے کہ آیت اللہ بہجت نے آیت اللہ العظمی خامنہ ای کے رہبر کے عنوان سے انقلاب اسلامی کی باگ ڈور سنبھالنے سے کئی برس پہلی آپ کی قیادت و رہبری کی پیشین گوئی کی تھی.