اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی

ماخذ : ابنا
جمعہ

5 اگست 2022

4:36:13 PM
1280108

محرم الحرام میں مختلف پابندیاں انسانی حقوق کی خلاف ورزی کیساتھ ڈنگ ٹپاﺅ پالیسی کا ثبوت، ساجد نقوی

علماءو وخطباءپیغام سید الشہداؑءکو احسن انداز میں پہنچائیں، اتحاد و وحدت کی فضاءقائم رکھتے ہوئے عزاداری منائیں۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی کہتے ہیں محرم الحرام کے آتے ہی مختلف قسم کی پابندیاں مسائل کا حل نہیں بلکہ خود مسائل کا موجب اور اپنی ذمہ داریوں سے کھلا گریز اور انتظامیہ کی نا اہلی کا ثبوت ہے، یہ پابندیاں انسانی حقوق ، شہری آزادیوں کی نفی اور ”ڈنگ ٹپاﺅ “پالیسی کا شاخسانہ ہے۔
ان خیالات کا اظہار انہوںنے محرم الحرام کے آغاز کے ساتھ ہی مختلف شخصیات پر پابندیوں پر ردعمل اور مختلف وفو د سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجدعلی نقوی نے کہاکہ محرم الحرام کے آتے ہی اعلیٰ سطح سے لے کر نچلی سطح تک انتظامیہ کی جانب سے مختلف قسم کی پابندیوں کے اعلانات ، خبریں اور اطلاعات آنا شروع ہوجاتی ہیں جو اپنے فرائض سے روگردانی، نا اہلی اور اپنی ذمہ داریوں سے کھلے گریز کے جہاں مترادف ہے وہیں یہ اقدامات ملکی آئین ، شہری آزادیو ں کےساتھ انسانی حقوق کی نفی کے مترادف ہے اور اپنی ناکامیوں کو چھپانے کے حیلے کے ساتھ صرف ”ڈنگ ٹپاﺅ پالیسی“ کا کھلا ثبوت ہے۔علماءو خطباءپر اپنے ہی ملک میں ، اپنے ہی شہر میں ، اپنے ہی علاقے میں زبان بندی، آنے جانے پر پابندیاں عائد کرنے سے کیا مسائل حل ہونگے یا مسائل زیادہ گھمبیر ہونگے ؟ جن لوگوں پر کسی قسم کا شک ہو تو ان پر کڑی نگاہ رکھی جائے، ان کی مانیٹرنگ کی جائے وہ خلاف قانون یا کسی کی توہین و تکفیر کریں تو اسے قانونی طور پر آہنی گرفت میں لیا جائے مگر اس طرح ہر سال کی طرح تمام معززین اور مجرموں کو ایک ہی فہرست میں شامل کردینا کہاں کا انصاف ہے ؟ کیسی انتظامی ذمہ داری ہے ؟یہ اقدامات اپنے فرائض سے روگردانی اور شہری آزادیوں وانسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے ۔
قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے مختلف شخصیات و وفو د سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ محرم الحرام میں پیغام حسینی ؑ کو عام کریں ، اتحاد و حدت کی فضا کو برقرار رکھیں او ر کسی کو معاشرے میں تقسیم یا تفریق پیدا کرنے کی اجازت نہ دیں پاکستان میں باہمی احترام ،بھائی چارے اور تمام مذاہب و مکاتب کے مقدسات کا احترام ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے عزاداری سید شہداءمنائیں اور امام عالی مقام کے فرامین و سیرت ،فضائل و مصائب اور اسلام کے آفاقی پیغام کو احسن انداز میں عوام الناس تک پہنچائیں ۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
۲۴۲