یوم آمریکا و اسرائیل کی مناسبت سے مرکزی صدر کا بیان‎‎

یوم آمریکا و اسرائیل کی مناسبت سے مرکزی صدر کا بیان‎‎

صہیونی ریاست اسرائیل کا وجود 15 مئی 1948ء کو رکھا گیا اور امریکہ نے 16 مئی 1948ء کو اس غیر قانونی ریاست کو تسلیم کیا۔ جس نے اپنی ناجائز پیدائش کے آغاز سے ہی اپنی بنیاد، واضح تشدد پر رکھی۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ اصغریہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کے مرکزی صدر حسن علی سجادی نے 16 مئی یوم مردہ باد امریکہ و اسرائیل کی مناسبت سے جاری کردہ پریس بیان میں کہا کہ اصغریہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان ہر سال شہید قائد علامہ عارف حسین الحسینی رحہ کے حکم پر 16 مئی کو یوم مردہ باد امریکہ و اسرائیل بھرپور انداز میں مناتی ہے۔ امسال بھی سید الشہداء امام حسین علیہ السلام کی سیرت کو اپناتے ہوئے اصغری جواں ظالم و جابر قوتوں، امریکہ و اسرائیل کے خلاف سراپا احتجاج ہونگے۔
صہیونی ریاست اسرائیل کا وجود 15 مئی 1948ء کو رکھا گیا اور امریکہ نے 16 مئی 1948ء کو اس غیر قانونی ریاست کو تسلیم کیا۔ جس نے اپنی ناجائز پیدائش کے آغاز سے ہی اپنی بنیاد، واضح تشدد پر رکھی۔ ان کا مقصد ہی قتل و غارت، دوسروں کو اذیّت پہنچانا اور فلسطینیوں کے حقوق کو پامال کرنا ہے۔ برطانیہ، فرانس اور امریکہ، اسرائیل کو وجود میں لائے لیکن بعض عرب ممالک اور ترکی اس وقت دنیا کی ظالم و جابر قوتوں کی خدمت میں پیش پیش ہیں اور اپنی نابودی اور بربادی کے راستے پر گامزن ہیں۔ قرآن مجید میں اللّٰہ تعالیٰ کا فرمان ہے کہ ظالموں کا ساتھ دینے والوں کا انجام نابودی اور تباہی کے سوا کچھ نہیں ہے۔
فرعون صفت امریکہ اور اسرائیل پوری دنیا میں ظلم و ستم کے سرغنے ہیں لیکن شرافت کا لبادہ اوڑھے دنیا کو فریب میں رکھے ہوئے ہیں۔ بات صلح کی کرتے ہیں درحقیقت خطے کو جنگ میں چاہتے ہیں۔ اس لئے ہم مردہ باد امریکہ و مردہ باد اسرائیل کہتے ہیں تو اس کا مطلب ظلم و بربریت، دہشتگردی، قتل و غارت، غیر قانونی قبضہ، بنیادی حقوق کی پامالی، تکبر و ہٹ دھرمی، اسلام مخالف قوتیں، مظلوم اقوام پر ناجائز تسلط اور ان کی تحقیر مردہ باد ہیں۔ فلسطین کی مقدس سرزمین کئی دہائیوں سے دنیا کے ناپاک ترین اور خبیث ترین انسانوں کے قبضے میں ہے لیکن دشمن صیہونی حکومت جا زوال شروع ہو چکا ہے۔ اس وقت امریکہ سیاسی، معاشرتی، اخلاقی اور معاشی زوال کا شکار ہے۔ انشاء اللّٰہ جلد ہم انسانیت دشمن، امریکہ و اسرائیل کے زوال کا مشاہدہ کریں گے۔ جب تک یہ ظالم امریکی حکمران اور اسرائیل کا ناجائز وجود موجود ہے مصیبتیں اور بے امنی دنیا میں باقی رہی گی کیونکہ دنیا کے کئی ممالک میں امریکہ نے جنگ و جدل کی آگ لگائی ہوئی ہے۔ پوری دنیا بلخصوص اسلامی ممالک کی زمہ داری ہے کہ امریکہ کی ظالمانہ پالسیوں اور اقدامات کے خلاف متحد ہو کر مقابلہ کریں اور اپنی اپنی قوم کو ذلت و رسوائی نجات دلوائیں۔
قائد پاکستان محمد علی جناح رحہ نے روز اول سے اسرائیل کے قیام کی کھل کر مخالفت کی، ایک تقریر میں انہوں نے کہا: "امریکی اور برطانوی حکومتیں کان کھول کر سن لیں، پاکستان کا بچہ بچہ اور تمام اسلامی دنیا اپنی جانیں دے کر ان سے ٹکرا جائیں گے اور فرعونی دماغ کو پاش پاش کر دیں گے۔۔۔" حکومت پاکستان بھی قائد اعظم رحہ کی اس فکر پر عمل پیرا ہوتے ہوئے تمام اسلامی ممالک اور دیگر ممالک پر فلسطینیوں کا ساتھ دینے کیلئے آمادہ کرے اور جن اسلامی ممالک نے اسرائیل سے کسی بھی قسم کے تعلقات قائم کئے ہیں ان تعلقات کو فوری ختم کرنے اور اسرائیل کا سوشل بائیکاٹ کرنے کیلئے زور ڈالے۔ 16 مئی یوم مردہ باد امریکہ و اسرائیل کے موقعے پر شہید قائد علامہ سید عارف حسین الحسینی کے فرمان پر لبیک کہتے ہوئے تمام مؤمنین اپنوں گھروں سے نکلیں اور ظالم قوتوں امریکہ و اسرائیل کے خلاف سراپا احتجاج ہو کر ان سے اظہارِ بیزاری کریں۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

242


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*