امام حسن عسکری علیہ السلام اور نماز

امام حسن عسکری علیہ السلام اور نماز

ائمہ معصومین نے اپنی پوری زندگی اللہ کی عبادت اور لوگوں کی خدمت میں خرچ کردی ۔آپ نے عبادتوں میں نماز کو سب سے زیادہ اہمیت دی۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ ائمہ معصومین نے اپنی پوری زندگی اللہ کی عبادت اور لوگوں کی خدمت میں خرچ کردی ۔آپ نے عبادتوں میں نماز کو سب سے زیادہ اہمیت دی ۔جیسا کہ امام حسن عسکری علیہ السلام کے بارے میں ملتا ہے کہ آپ نماز کے وقت اپنے سارے کام بالائے طاق رکھ دیتے ۔
     "ابو ہاشم جعفری ''کا بیان ہے کہ میں امام کی خدمت میں حاضر تھا۔اس وقت آ پ کچھ تحریر فرمارہے تھے کہ وقت نماز آچلا ۔آپ نے وہ تحریر الگ رکھ دی اور نماز کے لئے کھڑے ہوگئے ۔آپ کی عبادت کا عالم یہ تھا کہ آپ کو دیکھ کر دوسرے لوگ خداکو یاد کرنے لگتے ۔جس وقت آپ ''صالح بن وصیف ''کے قید خانہ میں تھے ۔بعض عباسیوں نے اس سے کہا کہ وہ آپ پر سختی سے پیش آئے ۔اس نے سب سے زیادہ برے اور ظالم لوگوں کو امام کی نظر رکھنے کی غرض سے تعینات کردیئے ۔لیکن وہ خود امام کے ساتھ رہتے رہتے بالکل بدک گئے اور نماز و عبادت بجالانے لگے ۔
    صالح بن وصیف نے انہیں بلایا اورکہا:لعنت ہو تم پر ! تم اس کے ساتھ کس طرح کا برتاؤکررہے ہو؟
    انہوں نے کہا:ہم اس شخص کے سلسلے میں کیا کہیں جو دن میں روزہ اور رات کو عبادت میں گزارتاہے ۔عبادت کے علاوہ کوئی کام نہیں کرتا ۔
    امام نے ہم سب کو پیغام دیا کہ دیکھو نما ز کو کبھی مت ترک مت کرنا اور ہمیشہ اللہ کی عبادت کرتے رہو تاکہ اللہ تمہاری مدد کرتا رہا ۔
ہمیں اس واقعہ سے یہ سبق ملتا ہے کہ اگر ہم بھی اپنی سیرت کو امام کی طرح سنوار لیں تو اعز و اقربا ء اور ماحول کے خراب ہونے کے سبب ہمارے کردار پر کوئی اثر نہیں پڑے گا ۔بلکہ برے لوگ بھی ہمارے کردار سے متاثر ہوکر نیک کردار کے ما لک بن جائیں گے ۔ہمارے اخلاق کو اتنے سنور جانا چاہئے کہ ہمیں دوسروں سے کہنے کی ضرورت نہ پڑے کہ آپ ایسا کریں اور آپ یہ نہ کریں ۔بلکہ وہ ہمارے اعما ل کو دیکھ کر خود بخود اپنےآپ  میں تبدیلی لانے لگے اور پھر انشاء اللہ اسی طرح رفتہ رفتہ پورا سماج و معاشرہ سنور جائے گا۔

بقلم ؛عظمت علی 
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
۲۴۲


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*