?>

پوپ فرانسس کے نام اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل کا مراسلہ

اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل نے پوپ فرانسس کو حضرت عیسی علیہ السلام کے یوم ولادت کے موقع پر مبارک باد پیش کی ہے۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل نے دنیا کے کیتھولک رہنما "پوپ فرانسس" کے نام ایک مراسلہ کے ذریعے حضرت عیسی سلام اللہ علیہ کے یوم ولادت پر مبارک باد پیش کی ہے۔
آیت اللہ رمضانی کے مراسلے کا مکمل ترجمہ حسب ذیل ہے:


بسم الله الرحمن الرحیم
﴿ وَ جَعَلْنَا ابْنَ مَرْیَمَ وَ اُمَّهُ آیَة ﴾
اور ہم نے فرزند مریم (عیسی) اور ان کی ماں کو اپنی نشانی قرار دیا
(سوره المؤمنون، آیه 50)


دنیا کے قابل احترام کیتھولک رہنما
جناب پوپ فرانسس صاحب
حضرت عیسی بن مریم سلام اللہ علیہ کے یوم ولادت اور نئے عیسوی سال کے آغاز کی مناسبت سے آپ کی خدمت میں ہدیہ تبریک پیش کرتے ہیں اور آپ کے ساتھ ساتھ دیگر تمام مسلمان مومنین کے ہمراہ عشق و محبت اور روحانیت کے پیکر اس بزرگ الہی پیغمبر کی ولادت پر جشن مناتے ہیں۔ اور نیز آپ سے دعا کی امید رکھتے ہیں اور ہم بھی آپ کے لیے عیسائیوں کے بزرگ رہنما ہونے کی حیثیت سے دعا کرتے ہیں۔ کچھ خاص اوقات اور خاص ایام میں مومنین کی دعاؤں کی قبولیت کے لیے پروردگار عالم کے لطف و کرم پر ایمان رکھتے ہیں اور معتقد ہیں کہ معبود کریم ان سچے مومنین کے دلوں سے نکلنے والی دعاوں کو قبول کرتا ہے جو منجی آخرالزمان کے ظہور اور قیام کے منتظر ہیں۔
ہم نے ایسے سال کو پیچھے چھوڑا ہے جس میں تمام انسانیت کے لیے بے شمار مصائب و آلام پر مبنی واقعات وجود میں آئے۔ قتل و غارت، جنگ و جدال، اسمگلنگ، تشدد کا فروغ، اسلحے سے بھرے گودام، گھرانے کی مقدس اکائی کو کمزور کرنا، نیز کورونا وائرس کی بیماری کا پھیلاؤ، ان سب دردناک واقعات نے ملکوں اور قوموں کو رنج و الم میں مبتلا کر دیا اور اس کرہ خاکی کے دینی رہنماؤں اور دانشوروں کو پہلے سے زیادہ تشویشناک بنا دیا۔
ایران کے حوزات علمیہ اور بزرگان دین، تمام اقوام و ادیان کے پیروکاروں کے متاثرین کے ساتھ اظہار ہمدردی کرتے ہوئے صحت، سلامتی، دنیا میں امن و صلح کی برقراری، مرحومین کے لیے مغفرت اور بیماروں کے لیے صحتیابی کی دعا کرتے ہیں۔
مذہبی برادری بھی آپ اور ان تمام لوگوں کی شکرگزار ہے جنہوں نے اس نازک موڑ پر انسانی ضروریات کو پورا کرنے اور لوگوں کی مشکلات کو دور کرنے کے لیے تلاش و کوشش کی۔ ہم بھی اپنے طور پر دنیا کے امن و امان کی دعا اور امید کے ساتھ ساتھ، ان مشکلات اور خدشات کو دور کرنے کی کوشش میں لگے ہوئے ہیں اور عالمی سطح پر خدمات انجام دینے سے کوتاہی نہیں کریں گے۔
آسمانی ادیان کی منطق میں قدرتی آفات در حقیقت، اہم الہی آزمائشوں کی طرف انسان کی توجہ مبذول کرانے کی نشانیاں ہیں۔ معرفت الہی، قیامت کے عقیدے سے واقفیت، عالمی امن و انصاف کے نفاذ اور انسانی معاشروں میں اعلیٰ اخلاق کا تحقق اس معنوی اور روحانی توجہ کے اہم اثرات ہوں گے۔ اور یہ ایک موقع ہے کہ معاشرے میں عظیم انسانی خوبیوں، دوسروں کے ساتھ ہمدردی، جانثاری اور عشق و محبت کے جذبے کو پروان چڑھایا جائے۔
ان واقعات کا جامع، منطقی اور عقلمندانہ علمی جائزہ، اور اس سے نپٹنے کا طریقہ، سائنس اور دین کے غیر حقیقی تقابل سے پرہیز، دینی تعلیمات کے ساتھ غیر مناسب طرز عمل سے دوری، معاشرتی خوشحالی اور معیشتی عدالت کو وجود میں لانے کی راہ میں تلاش و کوشش، یکجہتی اور امید کو تقویت پہنچانا، معاشرے میں امن، سکون اور مہربانی کی راہ ہموار کرنا، وغیرہ وغیرہ تمام دینی اور ثقافتی شخصیات، دانشوروں اور اہل علم افراد کے واضح اور آشکار فرائض کے مصادیق ہیں۔
اس کے ساتھ ساتھ ، مذہبی رہنما اور دینی علماء معاشرے کے روحانی کمال اور صحت کی حفاظت، اخلاقی خوبیوں کے مزید ادراک کے لئے راہ ہموار کرنے، اور مذہبی اعتقاد اور معرفت کو تقویت دینے کے ذمہ دار ہیں۔ معاشرے میں روحانیت کے تحقق کے لیے دعا اور مناجات کے معارف کو پھیلانا اور لوگوں کے دلوں میں امید کی فضا قائم کرنا، آج کے عالمی حالات میں مذہبی رہنماؤں کے اہم فرائض میں شامل ہے۔
بلاشبہ ان امور کی انجام دہی کے لئے تمام ادیان کے بزرگ قائدین اور زعماء کی حوصلہ افزائی اور مدد کے ساتھ علمی اور دینی مراکز کے تعاون کی بھی ضرورت ہے جو انبیاء کی الہی تعلیم کو ایک قیمتی اثاثہ کے طور پر استعمال کرتے ہوئے انسان کو کمال اور سعادت کی طرف رہنمائی کرتے ہیں۔
انسان کی سوچ و نظریہ کو حملے کا نشانہ بنانے والے عوامل، ادیان الہی اور بزرگان دین کی شان میں گستاخی، بے انصافی، امتیازی سلوک، پابندیاں، ماحولیاتی مشکلات، جنگ، دھشتگردی، بڑے پیمانے پر تباہی پھیلانے والے ہتھیاروں کے استعمال میں توسیع جیسے عظیم بحرانی ماحول سے اس وقت تک مقابلہ نہیں ہو سکتا جب تک مذہبی رہنما الہی تعلیمات کے سائے میں باہمی اتحاد کے ساتھ میدان میں نہیں اتریں گے۔
ایک بین الاقوامی معاشرے کی تشکیل اور عالمی طاقتوں کو انبیائے الہی جیسے حضرت موسی، حضرت عیسی اور حضرت محمد علیہم السلام کی تعلیمات کے اصولوں کی طرف متوجہ کرنا یقینی طور پر اس عظیم مقصد کے حصول کی راہ میں اہم ترین اقدام ہے۔
الحمد للہ، آپ کی نگاہ میں اور اسلام و مذہب اہل بیت علیہم السلام سے وابستہ دینی شخصیات کی نظر میں اخلاقی برائیوں، بدعنوانیوں، امتیازی سلوک، بے انصافیوں، پابندیوں اور انسانی ظلم و ستم سے پیدا ہونے والی پریشانیوں کا اس وقت تک قلع قمع نہیں ہو سکتا جب تک اخلاق، معنویت، الہی نمائندوں کی تعلیمات پر عمل، معاشرے میں عشق و محبت کے عناصر کی تقویت، گھرانوں اور معاشروں میں عدالت، امن اور ہمدردی کی فضا قائم نہ ہو سکے۔ دینی رہنماؤں کی پیروی اس راہ میں پائے جانے والے نشیب و فراز سے گزرنے کا موثر ترین عامل ہے۔
حقیقی الہٰی رہنما ہمیشہ سے ہی خداوند متعالٰ اور اس کے سچے نبیوں کے ساتھ دوستی اور عہد کے وفادار رہیں گے۔ اسلامی جمہوریہ ایران آج ان مشکل حالات میں فراواں پابندیوں کے دباؤ کے باوجود دینی رہنماؤں خصوصا رہبر انقلاب اسلامی کی رہنمائی کے زیر سایہ، ناقابل تعریف رضاکارانہ کاوشوں اور حکومت و رعایا کے تمام شعبہ ہائے زندگی منجملہ ڈاکٹروں، نرسوں، ملازموں، فوجیوں، حوزہ اور یونیورسٹی کے اساتذہ، طلاب اور اسٹوڈینٹس وغیرہ میں ہمدردی اور باہمی تعاون کے نایاب نمونے دیکھ رہا ہے جو نہ صرف ان بلند اہداف کے تحقق کی راہ میں بلکہ دیگر انسانوں کی خدمت کی راہ میں بھی جد وجہد کرتے نظر آتے ہیں۔
میں اس موقع کو غنیمت سمجھتے ہوئے ایک بار پھر الہی صفات کے مظہر، نبی برحق حضرت عیسی مسیح علیہ السلام کے یوم ولادت پر مبارک باد پیش کرتا ہوں اور آنجناب کے لیے صحت و تندرستی کی امید رکھتا ہوں اور یہاں پر یہ اعلان کرتا ہوں کہ میں ایک بین الاقوامی دینی ادارے کی ذمہ داری دوش پر لینے کے عنوان سے علمی، تحقیقی، ثقافتی اور دینی تجربات کو بین الاقوامی میدان اور "کرسمس کے سالانہ پیغام" میں بیان شدہ آپ کی جانب سے اہداف و مقاصد کے حصول کی راہ میں پیش کرنے کو تیار ہوں۔
جناب عالی اور تمام ادیان الہی کے رہنماؤں پر درود و سلام

                                                                                   رضا رمضانی
                                                                        سیکرٹری جنرل اہلبیت (ع) عالمی اسمبلی

..............

242
 




اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*

مغربی ممالک میں پیغمبر اکرم (ص) کی توہین کی مذمّت
ویژه‌نامه ارتحال آیت‌الله تسخیری
پیام رهبر انقلاب به مسلمانان جهان به مناسبت حج 1441 / 2020
حضـرت ابــوطالب (ع) حامی پیغمبر اعظـم (ص) بین الاقوامی کانفرنس
ہم سب زکزاکی ہیں / نائیجیریا کے‌مظلوم‌شیعوں کے‌ساتھ اظہار ہمدردی