پاک ایران کا سائنسی و تعلیمی تعاون کی مضبوطی کا جائزہ

پاک ایران کا سائنسی و تعلیمی تعاون کی مضبوطی کا جائزہ

اختر حسین نے سائنس، تعلیم اور فارسی زبان کے فروغ کے شعبوں میں دوطرفہ تعاون کو وسعت دینے کے لیے ایران اور پاکستان کی صلاحیتوں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ دو مسلمان ہمسایہ ممالک کے درمیان طلباء اور پروفیسروں کے تبادلے تعلقات کو مضبوط بنانا مشترکات اور خامیوں کو دور کرنا میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ لاہور میں اسلامی جمہوریہ ایران کے ایوان ثقافت کے سربراہ اور پاکستان کے صوبے پنجاب میں اسلامک کالج آف پاکستان کے فیکلٹی ممبران نے دونوں ممالک کے درمیان سائنسی و تعلیمی تعاون کو فروغ دینے کا جائزہ لیا۔

ایرانی ثقافتی اتاشی جعفر روناس نے منگل کے روز اسلامیہ کالج کے دورے کے موقع پر اس کے سربراہ اختر حسین اور اس کے فیکلٹی ممبران سے ملاقات کی۔
انہوں نے دونوں ممالک کے درمیان تعاون تعلیمی اور ثقافتی خیالات کی توسیع کے طریقوں پر تبادلہ خیال کیا۔
اختر حسین نے سائنس، تعلیم اور فارسی زبان کے فروغ کے شعبوں میں دوطرفہ تعاون کو وسعت دینے کے لیے ایران اور پاکستان کی صلاحیتوں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ دو مسلمان ہمسایہ ممالک کے درمیان طلباء اور پروفیسروں کے تبادلے تعلقات کو مضبوط بنانا مشترکات اور خامیوں کو دور کرنا میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ سول لائن کے اسلامیہ کالج کا فارسی زبان و ادب کا شعبہ حالیہ دہائیوں میں ایک جھکاؤ والے راستے سے گزرا ہے اور فارسی زبان اور ادب کے فارغ التحصیل افراد کے لیے کیریئر سے متعلق کچھ مسائل کی وجہ سے، اس شعبے میں دلچسپی رکھنے والوں کو پاکستانی سرکاری یونیورسٹیوں اور کالجوں میں چیلنجز کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔
ڈاکٹر اختر حسین نے چند اقدامات کو اہم قرار دیا، جیسے کہ فارسی کتابوں کا اردو میں ترجمہ کرنے کے لیے ترجمے کے مراکز کا قیام تاکہ فارغ التحصیل افراد کے لیے ملازمت کے مواقع پیدا کیے جا سکیں، اور کہا کہ اس طرح کے اقدامات تحقیقی سرگرمیوں میں اضافے کا باعث بن سکتے ہیں اور پاکستانی عوام کو ایران کی کامیابیاں اور صلاحیتوں میں جاننا چاہیے۔
انہوں نے لاہور میں ایرانی ثقافت کے ایوان کی شرکت کے ساتھ ایک کانفرنس سمیت سائنسی تقریبات کے انعقاد کی بھی تجویز دی۔
جعفر روناس نے بھی اسلامک کالج کا لاہور میں اعلیٰ تعلیم کے قدیم ترین مراکز میں سے ایک کے طور پر دورہ کرنے پر اطمینان کا اظہار کیا اور کہا کہ لاہور میں ایرانی ثقافت کا ایوان پاکستانی طلباء کو اسلامی ایران کی ثقافت اور زبان سے بہتر اور مؤثر طریقے سے آشنا کرنے کے لیے سائنسی، خصوصی اور ثقافتی سیمینار منعقد کرنے کے لیے اس تعلیمی ادارے کے ساتھ تعاون کرنے کے لیے تیار ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔

242


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*