لائبیریا؛ عیسائیوں کی دعائیہ تقریب میں بھگدڑ مچنے سے 29 افراد ہلاک

لائبیریا؛ عیسائیوں کی دعائیہ تقریب میں بھگدڑ مچنے سے 29 افراد ہلاک

پولیس ترجمان موسز کارٹر نے کہا کہ یہ اموات کی ابتدائی اطلاعات ہیں اور اس میں مزید اضافے کا خدشہ ہے کیونکہ اکثر زخمیوں کی حالت نازک ہے جبکہ مرنے والوں میں بچے بھی شامل ہیں۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ مغربی افریقی ملک لائبیریا کے دارالحکومت مونروویا میں عیسائیوں کی دعائیہ تقریب میں بھگدڑ مچنے سے کم از کم 29 افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہو گئے۔

موصولہ رپورٹ کے مطابق یہ واقعہ جمعرات کو علی الصبح پیش آیا۔

پولیس ترجمان موسز کارٹر نے کہا کہ یہ اموات کی ابتدائی اطلاعات ہیں اور اس میں مزید اضافے کا خدشہ ہے کیونکہ اکثر زخمیوں کی حالت نازک ہے جبکہ مرنے والوں میں بچے بھی شامل ہیں۔

واقعے کی تفصیلات ابھی تک منظر عام پر نہیں آ سکیں لیکن یہ بھگدڑ عیسائیوں کی دعائیہ تقریب کے دوران مچی جسے لائبیریا میں کروسیڈ(صلیبی جنگ) کہا جاتا ہے اور یہ ایک فٹبال کے میدان میں منعقد ہوتی ہے۔

اس طرح کی تقریبات میں لائبیریا میں عموماً ہزاروں افراد شرکت کرتے ہیں جہاں ملک کی 50 لاکھ سے زائد آبادی عیسائی ہے۔

سوشل میڈیا پر زیر گردش ویڈیوز اور تصاویر کے مطابق مقامی سطح پر مقبول پادری ابراہام کروما لوگوں کو دو روزہ دعائیہ تقریبات میں شرکت کی دعوت دے رہے تھے۔

مقامی میڈیا کی رپورٹس کے مطابق بھگدڑ اس وقت مچی جب ٹھگوں کے گروہ نے عبادت کرنے والوں پر چھروں اور تیز دھار آلوں سے حملہ کردیا۔

26 سالہ عینی شاہد ایمینوئیل نے اے ایف پی کو بتایا کہ تقریب کے اختتام پر انہیں زوردار آوازیں سنائی دیں جس کے بعد انہوں نے کئی لوگوں کی لاشیں پڑی ہوئی دیکھیں۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

242


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*