فخری زادے کے قتل کے لیے امریکہ نے اسرائیل کو گرین سیگنل دکھایا: دی گارڈین

فخری زادے کے قتل کے لیے امریکہ نے اسرائیل کو گرین سیگنل دکھایا: دی گارڈین

کچھ وجوہات کا حوالہ دیتے ہوئے، ایک برطانوی ذرائع نے امکان ظاہر کیا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایران کے جوہری اور دفاعی سائنسدان کے قتل پر رضامندی کا اظہار کیا ہے۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ ایک برطانوی اخبار نے اتوار کے روز اپنے اداریے میں لکھا ہے کہ ایرانی جوہری اور دفاعی سائنسدان محسن فخری زادے کا قتل غالبا صیہونی ایجنٹوں اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی اجازت سے کیا گیا تھا۔
دی گارڈین اخبار نے اتوار کے روز اپنے اداریے میں لکھا ہے کہ ایسے حال میں کہ موجودہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ وائٹ ہاؤس میں اپنے آخری ایام میں جان بوجھ کر اپنے تمام مخالفین کو حملوں کا نشانہ بنا رہے ہیں، یقینا محسن فخری زادے کے قتل پر رضامند رہے ہیں۔
دی گارڈین کی خبر کے مطابق ، ایران کے بڑھتے ہوئے یورینیم ذخائر اور ٹرمپ کے خطرے کے احساس کے بارے میں بین الاقوامی جوہری توانائی ایجنسی کے انسپکٹرز کی ایک حالیہ رپورٹ کے مطابق ، ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے مشیروں سے فوجی آپشن کو استعمال کرنے کے لئے کہا تھا ، لیکن ان کے مشیر انہیں حملے سے روک رہے تھے۔ کچھ امریکی اور علاقائی تجزیہ کاروں کا خیال ہے کہ اسرائیل کی یہ کارروائی ٹرمپ کی اجازت ملنے کے بعد ہوئی ہے۔
بعد ازآں، اس اخبار نے حالیہ واقعات میں امریکی اسرائیلی باہمی تعاون کی کچھ وجوہات کا حوالہ دیتے ہوئے لکھا ہے کہ امریکہ اور اسرائیل نے حالیہ برسوں میں ایران کے اندر تخریب کاری میں تعاون کیا ہے۔ یہ ٹرمپ ہی تھے جنہوں نے ذاتی طور پر شہید قاسم سلیمانی کے قتل کا حکم دیا تھا، یہ ایک غیر قانونی فعل تھا جس پر انہوں نے فخر کیا۔
گارڈین نے پھر لکھا کہ بلاشبہ پچھلے چار سالوں میں ایران کے مقابلے میں ٹرمپ کی پالیسی کی شدید ناکامی پر وہ مایوسی کا شکار ہیں۔ یہاں تک کہ زیادہ سے زیادہ دباؤ کا طریقہ کار بھی کارآمد ثابت نہ ہو سکا اور وہ تہران کو اپنے سامنے گھٹنے ٹیکنے پر مجبور نہیں کر سکے۔  
گارڈین نے آخر میں یہ نتیجہ اخذ کیا کہ ٹرمپ نے اپنے احمقانہ کاموں کے ذریعے علاقائی کشیدگی بڑھانے کے سوا کچھ نہیں کیا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۴۲


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*