عالمی ایٹمی ادارے کو کسی سیاسی دباؤ کے سامنے نہیں جھکنا چاہیے: ایران

عالمی ایٹمی ادارے کو کسی سیاسی دباؤ کے سامنے نہیں جھکنا چاہیے: ایران

باقری نے ویانا مذاکرات کی سنجیدگی پر توجہ مرکوز کرنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ہماری توجہ غیر منصفانہ پابندیوں کو اٹھانے پر ہے۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ نائب ایرانی وزیر خارجہ برائے سیاسی امور نے کہا ہے کہ بین الاقوامی ایٹمی توانائی ایجنسی کو اپنی تکنیکی نوعیت کو برقرار رکھنا اور کسی سیاسی دباؤ کا شکار نہیں ہونا چاہیے۔

یہ بات جوہری مذاکرات میں اسلامی جمہوریہ ایران کے چیف مذاکرات کار "علی باقری" نے پیر کے روز الجزیرہ چینل کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی۔
انہوں نے کہا کہ ہمارے لیے اپنی جوہری پالیسی سے پیچھے ہٹنے کی کوئی وجہ نہیں ہے جب تک کہ دوسرا فریق اس کا ارتکاب نہ کرے۔ امریکہ کے پاس جوہری معاہدے کے حوالے سے نئی حقیقت کو تسلیم کرنے کے سوا کوئی چارہ نہیں ہے۔
باقری نے ویانا مذاکرات کی سنجیدگی پر توجہ مرکوز کرنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ہماری توجہ غیر منصفانہ پابندیوں کو اٹھانے پر ہے۔
انہوں نے کہا کہ ہم جوہری معاہدے کی شرائط کے مطابق اپنی جوہری سرگرمیاں جاری رکھیں گے اور ترقی کریں گے اور ہم چاہتے ہیں کہ امریکہ پابندیاں اٹھانے کی ضمانتیں فراہم کرے اور ویانا مذاکرات میں اسے فراہم کرے۔
انہوں نے خطے کی صورتحال کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ علاقے کے مسائل پر صرف خطے کے ممالک کے درمیان بات چیت ہوتی ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

242


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*