?>

دورۂ جموں و کشمیر کا مقصد وہاں کے عوام کے مسائل کو حل کرانا ہے: مولانا کلب جواد نقوی

دورۂ جموں و کشمیر کا مقصد وہاں کے عوام کے مسائل کو حل کرانا ہے: مولانا کلب جواد نقوی

مولانا نے کہا کہ جموں و کشمیر میں بنیادی سہولیات کا فقدان ہے ،شیعہ و سنی کے ساتھ دیگر مذاہب کے افراد نے بھی ہمارے دورے کا استقبال کیا

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ لکھنو کے امام جمعہ مولانا سید کلب جواد نقوی نے آج اپنے دورہ ٔجموں و کشمیر سے متعلق بیان دیتے ہوئے کہا کہ ہزارہا مخالف پروپیگنڈوں کے باوجود ہمارا دورۂ جموں و کشمیر توقع سے زیادہ کامیاب رہا ۔

دفتر مجلس علمائے ہند کی جانب سے ارسال کردہ رپورٹ کے مطابق، مولانا نے کہاکہ کچھ لوگ یہ کہہ رہے تھے کہ جموں و کشمیر کے عوام ہمارا استقبال نہ کریں کیونکہ اس سے شیعہ و سنی فساد بھڑک سکتا ہے ۔مگر اللہ نے ایسا لطف کیا کہ جموں و کشمیر میں شیعہ و سنی دونوں فرقے کے افراد نے ہمارے دورے کا والہانہ استقبال کیا ۔حد یہ ہے کہ ہندو اور بعض سکھ حضرات بھی ملاقات کے لیے آئے اور وفد کا استقبال کیا ۔

مولانانے کہا کہ وہاں اہلسنت کے عظیم الشان مدرسے قائم ہیں جہاں پر ہمیں دعوت دی گئی اور انہوں نے اپنے مسائل سے ہمیں باخبر کیا ۔مولانانے کہاکہ ہم جموں و کشمیر میں جہاں بھی گئے وہاں سڑکیں، بجلی ،پانی اور دیگر ضروری سہولیات کا فقدان پایا ۔بعض علاقوں تک پہونچنے کے لیے تو سڑکیں بھی موجود نہیں ہیں ،بلکہ نوکیلے پتھروں سے سجے ہوئے راستے ہیں جن پر گاڑیوں کا چلنا بھی دشوار ہے ۔ہم نے وہاں کے لوگوں سے ملاقات کرکے ان کی پریشانیوں کے بارے میں جانا اور انہیں مسائل کے حل کی یقین دہانی کرائی ۔جموں کی معروف انجمن تنظیم المومنین کے کارکنان اور اس کے ذمہ دار جناب طاہر نقوی نے دورے میں اہم کردار اداکیا۔ ساتھ ساتھ ہی اسلم قریشی ریٹائرڈ آئی اے ایس افسر، دیگر قریشی برادران ،کاظمی برادران ،ڈاکٹر علمدار حسین جموں اینڈ کشمیر کے کلچرل آفیسر، جناب انصار مہدی ،اور دیگر لوگ شامل رہے ۔
مولانا نے اپنے دورے میں ہمالیہ کے سرحدی علاقوں کا دورہ کیا جہاں ان کے والد ماجد مولانا سید کلب عابد طاب ثراہ تشریف لایا کرتے تھے، ان علاقوں میں مولانا مرحوم کے خدمات اظہر من الشمس ہیں جنہیں آج بھی وہاں کے لوگ یاد کرتے ہیں۔

مولانا کلب جواد نقوی نے سورنکوٹ ،مینڈھر ،پونچھ، راجوری سمیت دیگر علاقوں کا دورہ کیا جس میں شیعہ و سنی ،ہندو اور سکھ تنظیموں کے سربراہان سے ملاقات کی ۔

مولانا کلب جواد نقوی راجوری میں ہمالیہ پی جی کالج بھی گیے جہاں کالج کے بانی جناب فاروق مضطر جو اہلسنت و الجماعت کی معروف شخصیت ہیں اور دیگر ذمہ داران نے شایان شان استقبال کیا۔ان کے ساتھ غلام شاہ بادشاہ یونیورسٹی کے پروفیسر بھی تھے ۔پونچھ میں سکھ اور ہندو تنظیموں کے ذمہ داران سے ملاقات کی اور ان کے مسایل سے آگاہی حاصل کی ۔انجمن ’ نیا پونچھ‘ اور انجمن ’ نوجوان سکھ سبھا‘ کے کارکنان ملاقات کے وقت موجود رہے جن میں جناب سکھویندر سنگھ اور مسٹرشرما خاص طور پر موجود رہے ۔

مینڈھر میں انجمن جعفریہ مینڈھراور پونچھ میں انجمن گل پور کے اراکین سے ملاقات کی اور مقامی حالات اور مسایل سے واقفیت حاصل کی ۔مینڈھر میں ایس ڈی پی، سید ظہیر عباس جعفری، مولانا محمد کوثر جعفری اور لکچرر ذوالفقار نقوی نے گرم جوشی سے استقبال کیا اور مومنین نے اپنے مسایل سے روشناس کروایا۔۔

مینڈھر سے گورسائی جاتے ہوئے مولانا کرامت حسین جعفری کی دعوت پر انکے گھر بھی تشریف لے گئے جہاں اہم مسایل پر بات چیت ہوئی۔

تحصیل سورنکوٹ میں ڈاکٹر امیر جعفری اور تقی رضوی صاحب نے پر جوش خیر مقدم کیا اور میمورنڈم سونپا۔ تحصیل حویلی پونچھ شہر خاص کے مومنین نے بھی اپنے مسائل سے آگاہ کیا اور میمورنڈم سونپا۔ مولانا آستانہ رضویہ پونچھ بھی تشریف لے گیے ۔
مولانا نے کہا کہ وہاں کے عوام نے بتایا کہ اب تک کوئی لیڈر ہمارا حال چال لینے تک نہیں آیا ،صرف آپ نے پہل کی ہے جو دوردراز کے علاقوں تک بھی پہونچے ہیں ۔مولانا نے کہاکہ گزشتہ ستّر سالوں سے کشمیر میں مسلمان لیڈر حکومت کرتے آئے ہیں مگر انہوں نے کبھی جموں و کشمیر کے بنیادی مسائل کی طرف توجہ نہیں کی ۔اگر وہ عوام کی پریشانیوں اور ان کے مسائل کو حل کرنے کی کوشش کرتے تو آج کشمیر کی اتنی ابتر صورتحال نہیں ہوتی ۔

مولانا نے کہاکہ ہم نے جموں و کشمیر کے عوام کے مسائل اور ان کی پریشانیوں کے بارے میں حکومت کو مطلع کیاہے اور جموں و کشمیر کے گورنر جناب منوج سنہا سے ملاقات کرکے ان کے مسائل پر بات چیت کی ہے ۔انہوں نے یقین دہانی کرائی ہے کہ بہت جلد ان پر غوروخوض کرکے ان کے مسائل حل کئے جائیں گے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۴۲


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*

مغربی ممالک میں پیغمبر اکرم (ص) کی توہین کی مذمّت
ویژه‌نامه ارتحال آیت‌الله تسخیری
پیام رهبر انقلاب به مسلمانان جهان به مناسبت حج 1441 / 2020
حضـرت ابــوطالب (ع) حامی پیغمبر اعظـم (ص) بین الاقوامی کانفرنس
ہم سب زکزاکی ہیں / نائیجیریا کے‌مظلوم‌شیعوں کے‌ساتھ اظہار ہمدردی