ایک طرف یوم خاندان ، دوسری طرف آج ہی کے دن فلسطینی خاندانوں پر قیامت ڈھا دی گئی، ساجد نقوی

ایک طرف یوم خاندان ، دوسری طرف آج ہی کے دن فلسطینی خاندانوں پر قیامت ڈھا دی گئی، ساجد نقوی

قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے الجزیرہ کی فلسطینی صحافی شیریں ابوالخیل کی اسرائیلی قابض افواج کی فائرنگ سے شہادت پر بھی گہرے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ انہیں اپنے صحافتی فرائض کی انجام دہی کے دوران نشانہ بنایا گیا۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی کہتے ہیں سامراجی قوتوں کا اسرائیل جیسی ناجائز ریاست کے حوالے سے ہمیشہ دہرا معیار رہاہے، یوم نکبہ جو ہر فلسطینی کےلئے تباہی، بربادی اور قتل وغارت گردی کے سوا کچھ نہ لایا، ایک طرف پوری قوم اور خاندان اجاڑ دیئے گئے دوسری جانب آج کے روز یوم خاندان منایا جارہاہے ، اسرائیلی افواج نے ہاتھوں مظلوم شہریوں اور ان کی املاک سمیت میڈیا ہاﺅسز اور صحافی بھی محفوظ نہیں، خاتون صحافی شیریں ابوالخیل کی شہادت بھی اس سفاکیت کا منہ بولتا ثبوت ہے۔
ان خیالات کا اظہار قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے یوم نکبہ 1948 (یوم المیہ)، خاندانوں کے عالمی دن اور فلسطینی صحافی کی شہادت پر اپنے پیغام میں کیا۔ قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے کہاکہ 7دہائیاں قبل اسرائیل جیسی ناجائز ریاست کو دنیا خصوصاً اسلامی دنیا میں خنجر کی طرح پیوست کیاگیا اور آج تک اس زہر آلود صیہونی و استعماری خنجر سے مظلوم و محکوم عوام کے ساتھ ساتھ اس کی سازشوں کا ہمسائے اور دیگر ممالک بھی شکار ہیں، خود ناجائز ریاست کا پشتی بان سامراج بھی اس کی سازشوں سے اب محفوظ نہیں رہا جس نے اسے خود اندرونی طور پر کمزور ترین کردیاہے۔ قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے کہاکہ یوم نکبہ(یوم المیہ)ہر فلسطینی ، ہر ذی شعور و درد دل رکھنے والے کےلئے تباہی، بربادی ، قتل غارت گری اور انسانی حقوق کی پامالیوں کی یاد تازہ کرتاہے ایک ایسا دن جب قابض افواج اور مسلح صیہونی جھتوں کے ذریعے لگ بھگ ساڑھے سات لاکھ فلسطینیوں کو گھروں سے، ان کی زمینوں سے اور ان کے آبائی علاقوں سے بے دخل کردیاگیا مگر صد افسوس آج ہی کے دن کو یوم خاندا ن کے طور پر بھی منایا جاتاہے جو عالمی قوتوں اور سامراج کے اسرائیل کے ساتھ گٹھ جوڑ کے حوالے سے دہرے معیار کا عکاس ہے ، ایک طرف یوم خاندان دوسری طرف مظلوم فلسطینیوں کے خاندانوں کو اجاڑ دیاگیا ان پر قیامت ڈھادی گئی مگر کسی کے کان پرجوں تک نہ رینگی۔
قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے الجزیرہ کی فلسطینی صحافی شیریں ابوالخیل کی اسرائیلی قابض افواج کی فائرنگ سے شہادت پر بھی گہرے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ انہیں اپنے صحافتی فرائض کی انجام دہی کے دوران نشانہ بنایا گیا اور پھر الزام بھی کسی اور پر تھونپے کی کوشش کی گئی کیونکہ مذکورہ صحافی اسرائیل اور سامراج کے دہرے معیار ،مظالم، اور عالمی میڈیا کے گھناﺅنے کردارکو دنیا کے سامنے آشکار کررہی تھیں ۔ اس ظالم و قابض افواج نے معصوم بچوں ، مظلوم شہریوں اور املاک سمیت میڈیا ہاﺅسز اور صحافیوں کو بھی نہیں بخشا ، کاش بعض ممالک جو اسرائیل کےساتھ نام نہاد ”ابراہم معاہدہ“ کے ذریعے پینگیں بڑھا رہے ہیں اور اپنے ذاتی مفادات کو ترجیح دے رہے ہیں انہیں یہ حقیقت نظر آجائے ۔ قائد ملت جعفریہ پاکستان نے کہاکہ جب تک مشرق وسطیٰ میں مسئلہ فلسطین اور جنوبی ایشیا میں مسئلہ کشمیر حل نہیں ہوگا پائیدار امن کا خواب شرمندئہ تعبیر نہیں ہوسکے گا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

242


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*