ایران پر پابندیوں کے حوالے سے جوبائیڈن کا موقف

ایران پر پابندیوں کے حوالے سے جوبائیڈن کا موقف

دنیل سیرور نے ایران پر بائیڈن کی حکومت کے موقف کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ یورپی ریاستیں متعدد مسائل خاص طور پر ایرانی جوہری پروگرام پر امریکی پالیسی سے ناخوش ہیں۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ امریکی جان ہاپکنز یونیورسٹی کے پروفیسر برائے بین الاقوامی تعلقات نے کہا ہے کہ جو بائیڈن کی انتظامیہ جوہری معاہدے کی واپسی اور ایران کے خلاف پابندیوں کے خاتمے کے بغیر یوروپی یونین کے ساتھ تعلقات معمول پر نہیں لے سکے گی۔

دنیل سیرور نے ایران پر بائیڈن کی حکومت کے موقف کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ یورپی ریاستیں متعدد مسائل خاص طور پر ایرانی جوہری پروگرام پر امریکی پالیسی سے ناخوش ہیں۔
سیرور نے کہا کہ بائیڈن کو ٹرمپ کی پالیسیوں کے اثرات کو پلٹنے میں کم سے کم دو سال لگیں گے اور ٹرمپ انتظامیہ کی پابندیوں نے ایران کو شدید نقصان پہنچایا ہے، جوہری معاہدے میں صرف واپسی اور پابندیوں کے خاتمے سے ہی اہم کامیابی حاصل ہو سکتی ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۴۲


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*