اسماعیلی بہروں کے رہنما: علماء اور مفکرین ایمان ابوطالب کو نسل جوان کے لیے ثابت کرنے کی کوشش کریں

اسماعیلی بہروں کے رہنما: علماء اور مفکرین ایمان ابوطالب کو نسل جوان کے لیے ثابت کرنے کی کوشش کریں

اسماعیلی بہرہ جماعت کے رہنما نے کہا: تاریخ میں مسلمانوں کے لیے ابوطالب کا کردار انتہائی اہمیت کا حامل ہے بعض نے ان پر کفر اور عدم ایمان کا الزام لگایا ہے لیکن یہ ایسے حال میں ہے کہ آپ کے تمام اجداد موحد تھے۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ جناب ابوطالب (ع) حامی پیغمبر اعظم (ص) بین الاقوامی سیمینار کے تیسرے روز ۱۱ مارچ ۲۰۲۱ کو "ابوطالب بین الاقوامی مفکرین کی نگاہ میں" کے عنوان سے ایک نشست کا انعقاد کیا گیا۔
اس نشست میں ہندوستان کی بہرہ جماعت کے رہنما "حاتم زکی الدین" نے گفتگو کرتے ہوئے سب سے پہلے اسلامی جمہوریہ ایران، رہبر انقلاب اسلامی، ایران کے عوام، اور اسلامی مزاحمتی محاذ خصوصا سید حسن نصر اللہ نیز جناب ابوطالب بین الاقوامی سیمینار کے منتظمین کا شکریہ ادا کیا۔
اسماعیلی بہرہ جماعت کے رہنما نے کہا: تاریخ میں مسلمانوں کے لیے ابوطالب کا کردار انتہائی اہمیت کا حامل ہے بعض نے ان پر کفر اور عدم ایمان کا الزام لگایا ہے لیکن یہ ایسے حال میں ہے کہ آپ کے تمام اجداد موحد تھے۔
انہوں نے مزید کہا: جناب ابوطالب نے اپنی دفات تک پیغمبر اکرم کی حمایت اور اسلام کے دفاع سے ہاتھ نہیں کھینچا۔ جناب ابوطالب کے اشعار اور ان کی باتیں ان کے ایمان اور پیغمبر اکرم پر عقیدہ کی دلیل ہیں۔ لہذا ہمیں ان لوگوں کے خلاف متفقہ موقف اختیار کرنا چاہیے جو آپ کی طرف کفر کی نسبت دیتے ہیں۔
انہوں نے آنلاین سیمینار میں گفتگو کرتے ہوئے کہا: رسول خدا (ص) سے ایک روایت نقل ہوئی ہے کہ میں اور علی پاکیزہ ترین صلب اور رحم سے پیدا ہوئے ہیں۔ پیغمبر اکرم کی حدیث آپ اور حضرت علی کے آباؤ و اجداد کی طہارت کو ثابت کرنے کے لیے کافی ہے۔ جناب ابوطالب نے پیغمبر اکرم اور جناب خدیجہ کے عقد کا خطبہ پڑھا اور اس خطبہ میں پیغمبر اکرم کے تمام اجداد پر درود و سلام بھیجا اس لیے کہ جناب ابوطالب کے تمام اجداد خدا پرست تھے۔
حاتم زکی الدین نے آخر میں کہا: علماء اور مفکرین نسل جوان کے لیے ایمان ابوطالب کے بارے میں حقائق کو واضح کرنے کی کوشش کریں۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۴۲


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*