?>

اسلامی تحریک کے رہنما کے خلاف کیس کی سماعت مارچ تک ملتوی/ شیخ زکزکی کے حامیوں پر سکیورٹی فورس کا حملہ

اسلامی تحریک کے رہنما کے خلاف کیس کی سماعت مارچ تک ملتوی/ شیخ زکزکی کے حامیوں پر سکیورٹی فورس کا حملہ

نائیجیریا کے دارالحکومت اور مختلف دیگر شہروں میں اس ملک کی اسلامی تحریک کے رہنما کے طرفداروں کے مظاہروں کے بعد نائیجیریا کی سیکورٹی فورس نے مظاہرین پر حملہ کر دیا۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی ابنا کی رپورٹ کے مطابق نائیجیریا کی اسلامی تحریک کے رہنما علامہ شیخ ابراہیم زکزکی کے کیس کی سماعت ملتوی کئے جانے پر ان کے حامیوں اور طرفداروں نے نائیجیریا کے مختلف شہروں میں احتجاجی مظاہرے کئے اور شیخ زکزکی کی رہائی کا مطالبہ کیا۔

اسلامی تحریک کے رہنما کے خلاف کیس کی سماعت کو مارچ تک کے لئے ملتوی کر دیا گیا۔ اس سے قبل بھی اس کیس کی سماعت کو پچیس اور چھبیس جنوری تک ملتوی کر دیا گیا تھا۔

ابوجا ٹائمز ویب سائٹ کے مطابق ۲۵ جنوری کو سکیورٹی فورسز نے علامہ زکزکی کی حمایت میں مظاہرہ کر رہے تحریک اسلامی کے اراکین پر حملے کیا جس میں کم از کم ایک شخص شہید ہو گیا جبکہ چھے کو گرفتار کر لیا گیا۔

یاد رہے کہ سن دو ہزار پندرہ میں شمالی نائیجیریا کے صوبے کدونا میں اس ملک کی فوج اور سیکورٹی فورس نے علامہ زکزکی کے دینی مرکز پر وحشیانہ حملہ کر کے وہاں موجود سیکڑوں افراد کو شہید کر دیا تھا جبکہ شیخ زکزکی اور ان کی اہلیہ کو زخمی حالت میں اٹھا کر لے گئے تھے اور تب سے آج تک وہ بدستور فوجی جیل میں قید ہیں۔ نائیجیریا کی فوج کے اس بہیمانہ حملے میں علامہ زکزکی اور انکی اہلیہ بری طرح زخمی جبکہ انکے تین جوان بیٹے شہید ہو گئے تھے۔

۔۔۔۔۔۔۔

/242


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*

مغربی ممالک میں پیغمبر اکرم (ص) کی توہین کی مذمّت
ویژه‌نامه ارتحال آیت‌الله تسخیری
پیام رهبر انقلاب به مسلمانان جهان به مناسبت حج 1441 / 2020
حضـرت ابــوطالب (ع) حامی پیغمبر اعظـم (ص) بین الاقوامی کانفرنس
ہم سب زکزاکی ہیں / نائیجیریا کے‌مظلوم‌شیعوں کے‌ساتھ اظہار ہمدردی