آیت اللہ رمضانی: حلال روزی کمانا عبادت ہے/ حقیقی عبادت اللہ کی نشانیوں میں غور و فکر ہے

آیت اللہ رمضانی: حلال روزی کمانا عبادت ہے/ حقیقی عبادت اللہ کی نشانیوں میں غور و فکر ہے

آیت اللہ رمضانی نے حلال رزق کمانے کو بھی عبادت شمار کرتے ہوئے کہا: حدیث معراج میں آیا ہے کہ عبادت کے 10 جزء ہیں اور 9 جزء حلال رزق کمانے میں ہیں۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ آیت اللہ رمضانی نے ماہ مبارک رمضان کے حوالے سے اپنے سلسلہ گفتگو کے اٹھارہویں دن عالمی یوم مزدور کی مناسبت سے کہا: عبادت صرف نماز، روزہ، حج وغیرہ میں منحصر نہیں ہے بلکہ حلال روزی کما کر اہل خانہ کو دینا بھی عبادت ہے۔
اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل نے عبادت کے عام مفہوم کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا: عبادت عام معنی میں ہر اس چیز کو شامل ہوتی ہے جو انسان کو خدا کی بندگی کے راستے میں قرار دے۔
انہوں نے واضح کیا: ہم اپنے ہر عمل کو عبادت شمار کر سکتے ہیں اگر وہ خدا کے حکم کے مطابق انجام پا رہا ہوں۔
آیت اللہ رمضانی نے اس بات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہ عبادت عام معنی میں قرآن اور روایات کے اندر بھی بیان ہوئی ہے، کہا: غور و فکر کرنا بھی ایک اہم ترین عبادت ہے اور امیر المومنین (ع) کے فرمان کے مطابق تفکر کے جیسی کوئی عبادت نہیں ہے۔
اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل نے یہ بیان کرتے ہوئے کہ عبادت عبودیت اور بندگی کی راہ میں ہونا چاہیے کہا: حقیقی عبادت اللہ کی نشانیوں میں غور و فکر کرنا ہے اور اہل اخلاص کی عبادت تفکر ہے۔
انہوں نے مزید کہا: یہ کہ تفکر ایک اہم عبادت ہے اس کا مطلب یہ نہیں ہے کہ ہم نماز و روزہ اور دیگر عبادات کو ترک کر دیں بلکہ وہ بھی اپنی جگہ فریضہ الہی ہیں۔
آیت اللہ رمضانی نے مزید کہا: انسان اگر کمال کی چوٹیوں کو سر کرنا چاہتا ہے اور اللہ کا قرب حاصل کرنا چاہتا ہے تو اسے تفکر کے علاوہ فرائض الہی کو بھی انجام دینا ہو گا۔
انہوں نے حلال رزق کمانے کو بھی عبادت شمار کرتے ہوئے کہا: حدیث معراج میں آیا ہے کہ عبادت کے 10 جزء ہیں اور 9 جزء حلال رزق کمانے میں ہیں۔

.......

242


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*