سعودی عرب نے اہل تشیع کو سفر کربلا سے منع کیا

سعودی عرب کے وہابی حکمرانوں نے شیعیان حجاز کو اربعین حسینی میں شرکت کے لئے کربلا جانے سے روک دیا۔

اہل البیت (ع) نیوز ایجنسی ـ ابنا ـ کی رپورٹ کے مطابق "نون خبر ایجنسی" نے فاش کیا ہے کہ سعودی حکمرانوں نے ایک نسل پرستانہ اور فرقہ پرستانہ اقدام کے ذریعے اپنے ملک سے سیدالشہداء (ع) کی عزاداری کے لئے کربلا جانے والے زائرین کو روک دیا اور انہیں عراق جانے کی اجازت دینے سے انکار کیا۔ نون خبر ایجنسی کے مطابق 700 حجازی شیعیان اہل بیت (ع) بحرین پہنچے تھے اور بحرین سے سعودی طیارے کے ذریعے عراق کے لئے روانہ ہونا چاہتے تھے مگر طیارے میں موجود سعودی سرکاری اہلکاروں نے انہیں طیارے میں سوار نہ ہونے دیا اور یوں انہیں کربلا کے سفر سے محروم کردیا گیا۔ یاد رہے کہ گذشتہ سال بھی خلیج فارس کے کنارے شیخ نشین عرب ریاستوں سمیت دنیا کے مختلف ممالک سے لاکھوں زائرین عراق آئے تھے اور اس سال بھی اربعین حسینی کی عزاداری میں شرکت کے لئے ایک کروڑ سے زائد عراقی زائرین و عزاداران حسینی سمیت 5 لاکھ زائرین بیرونی ممالک سے کربلائے معلی پہنچے تھے اور بیرونی زائرین میں اچھی خاصی تعداد خلیج فارس کی عرب ریاستوں کے باشندوں پر مشتمل تھی تا ہم اس سال سعودی زائرین سعودی عرب کے سلفی حکام کے تعصبات کا نشانہ بنے۔


پیام رهبر انقلاب به مسلمانان جهان به مناسبت حج 1441 / 2020
ہم سب زکزاکی ہیں / نائیجیریا کے‌مظلوم‌شیعوں کے‌ساتھ اظہار ہمدردی
حضـرت ابــوطالب (ع) حامی پیغمبر اعظـم (ص) بین الاقوامی کانفرنس میں
سینچری ڈیل، نہیں