برطانیہ میں مسلمانوں کی تعداد میں دن بدن اضافہ

محققین کا کہنا ہے کہ برطانیہ میں مسلمانوں کی تعداد میں کثرت سے اضافہ ہو رہا ہے اور ہر مہینہ سینکڑوں انگریز اور یونیورسٹیوں میں پڑھنے والے دوسرے ممالک کے طلبہ اسلام کی طرف مائل ہو رہے ہیں۔

اہلبیت(ع) نیوز ایجنسی ۔ابنا۔ حالیہ تحقیقات کے مطابق گزشتہ ۶ سالوں سے برطانیہ میں مسلمانوں کی تعداد میں ۳۷ فیصد اضافہ ہوا ہے اور مساجد کی تعداد ۱۵۰۰ ہو گئی ہے۔گیٹسین سینٹر کے محققین نے بتایا ہے کہ اس ملک میں مسلمانوں کی تعداد میں کثرت سے اضافہ ہو رہا ہے اور ہر مہینہ دسیوں انگریز اور یونیورسٹیوں میں پڑھنے والے دوسرے ممالک کے طلبہ اسلام کی طرف مائل ہو رہے ہیں۔ٹونی بلیئر کی سالی لورین کی بیٹی الکسانڈرا گزشتہ ماہ رمضان میں مسلمان ہو گئی ان کا کہنا ہے : میں ہمیشہ اپنی ماں کے ساتھ نماز پڑھتی ہوں۔ اسلام کے اندر ایک خاص نوعیت کا سکون پایا جاتا ہے اور یہ آرام و سکون مجھ پر بہت اثر گزار ثابت ہوتا ہے۔ حجاب کرنے کے بعد مدرسہ کے اساتید نے میرا احترام کرنا شروع کر دیا ہے اور انہوں نے اسکول میں مسلمان اسٹوڈنٹس کے لیے ایک نماز خانہ مخصوص کیا ہے۔۱۴ سالہ جوان جارج رنڈیف نے اسلام قبول کرنے کے بعد بتایا کہ اذان سے عشق اسلام سے قریب ہونے کا باعث بنا ہے ان کا کہنا تھا کہ جب بھی اذان کی آواز آتی تھی تو میرے اندر ایک عجیب قسم کا احساس پیدا ہو جاتا تھا۔ اسی وجہ سے مجھے اسلام سے انٹرسٹ ہو گیا اور میں اسکول میں پڑھنے والے مسلمان دوستوں کے قریب ہو گیا اور دھیرے دھیرے ان کی مدد سے مسلمان ہو گیا۔۱۵سالہ لڑکی شیلا جو گزشتہ سال مسلمان ہوئی تھی کا کہنا ہے کہ حقیقی عشق اسلام میں ہی پوشیدہ ہے۔  اسلام کے خلاف تبلیغات شکست کھا چکی ہیں اور ہمارے ملک کے جوان دن بدن اسلام کی طرف مائل ہو رہے ہیں۔محققین کا کہنا ہے کہ برطانیہ میں بے راہ روی، بد اخلاقی اور سماجی فسادات اس بات کا باعث بنے ہیں کہ برطانیہ کے عوام اسلام کی طرف مائل ہوں۔    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔/242


دنیا بھر میں میلاد پیغمبر رحمت(ص) کی محفلوں کی خبریں
سینچری ڈیل، نہیں
حضـرت ابــوطالب (ع) حامی پیغمبر اعظـم (ص) بین الاقوامی کانفرنس میں
ہم سب زکزاکی ہیں / نائیجیریا کے‌مظلوم‌شیعوں کے‌ساتھ اظہار ہمدردی