رپورٹ

ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی گرفتاری کے 11 سال مکمل

ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی گرفتاری کے 11 سال مکمل

گیارہ سال قبل 30 مارچ 2003ء کو ڈاکٹر عافیہ صدیقی کو ان کے تین بچوں سمیت گرفتار کرکے افغانستان میں امریکہ کے حوالے کیا گیا تھا۔ ان کے بچوں کو تو رہائی نصیب ہوگی مگر عافیہ صدیقی تاحال امریکی قید میں ہیں۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ آج ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی گرفتاری کو 11 سال مکمل ہوچکے ہیں۔ اس سلسلے میں ان کی رہائی کے لیے سرگرم سیاسی و سماجی جماعتیں، انسانی حقوق کی تنظیمیں اور مختلف شخصیات کی جانب سے احتجاجی مظاہرے، ریلیاں، سیمینارز اور اجلاس منعقد کئے جائیں گے۔ اسلام آباد سپر مارکیٹ میں سول سوسائٹی اور طلباء تنظیموں کی جانب سے بازوؤں پر سیاہ پٹیاں باندھ کر خاموش احتجاج کیا جائے گا۔ گیارہ سال قبل 30 مارچ 2003ء کو ڈاکٹر عافیہ صدیقی کو ان کے تین بچوں سمیت گرفتار کرکے افغانستان میں امریکہ کے حوالے کیا گیا تھا۔ ان کے بچوں کو تو رہائی نصیب ہوگی مگر عافیہ صدیقی تاحال امریکی قید میں ہیں۔ امریکی عدالت نے عافیہ صدیقی کو 23 ستمبر 2010ء کو 86 سال قید کی سزا سنائی تھی۔ پاکستان تمام تر امریکی احکامات بجا لانے کے باوجود بھی تاحال ڈاکٹر عافیہ صدیقی کو رہائی نہیں دلا سکا۔ ایبٹ آباد میں اسامہ بن لادن کے قتل کے بعد ڈاکٹر شکیل آفریدی کی صورت میں عافیہ صدیقی کی رہائی کی امید نظر آئی تھی مگر بعد کے حالات و واقعات نے یہ ثابت کر دیا کہ نہ امریکہ کو شکیل آفریدی کی رہائی میں دلچسپی ہے اور نہ ہی پاکستانی حکمران ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی کے خواہشمند ہیں۔ ڈاکٹر عافیہ صدیقی کو امریکی سامراج کی قید سے رہائی تو نصیب نہ ہوئی تاہم ان کی رہائی کے نام پر چند مذہبی اور سیاسی جماعتوں کو پوائنٹ سکورنگ کے لیے موضوع ضرور مل چکا تھا۔ مگر جب ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی ہمشیرہ فوزیہ صدیقی نے کراچی سے الیکشن لڑنے کی کوشش کی تو انہی جماعتوں نے فوزیہ صدیقی کا ساتھ دینے سے یکسر انکار کر دیا جو ہمیشہ اور ہر میدان میں اپنے تعاون کی یقین دھانی کراتیں تھیں۔ قانونی یا سفارتی مشکلات اپنی جگہ لیکن اس حقیقت سے انکار ممکن نہیں کہ اگر پاکستانی حکمران ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی میں اتنی دلچسپی لیتے جتنی امریکہ نے ریمنڈ ڈیوس کی رہائی کے لیے ظاہر کی تھی تو کوئی شک نہیں آج ڈاکٹر عافیہ صدیقی آزاد ہوتیں۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۴۲


پیام امام خامنه ای به مسلمانان جهان به مناسبت حج 2016
We are All Zakzaky
telegram