داعش کے مظالم پر اقوام متحدہ بھی بول اٹھی

داعش کے مظالم پر اقوام متحدہ بھی بول اٹھی

داعش نام سے معروف دہشتگرد گروہ نے عراق میں ظلم ستم کا وہ بازار گرم کر رکھا ہے کہ اقوام متحدہ کا ادارہ بھی ان مظالم پر خاموش نہیں رہ سکا ہے

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ داعش نام سے معروف دہشتگرد گروہ نے عراق میں ظلم ستم کا وہ بازار گرم کر رکھا ہے کہ اقوام متحدہ کا ادارہ بھی ان مظالم پر خاموش نہیں رہ سکا ہے ۔اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کی کمشن کی سربراہ نے اس بات پر تاکید کی ہے کہ  داعش گروہ عراق میں جنگی جرائم کا مرتکب ہو رہا ہے ۔عراق میں درجنوں عام شہریوں اور بے گناہ قیدیوں کو سرعام پھانسی پر لٹکانا اور انہیں ان کے رشتہ داروں کے سامنے گولیوں سے اڑانا جنگی جرائم کے واضح ثبوت ہیں ۔۔داعش کے جرائم کی یہ تفصیلات اس وقت سامنے آئی ہیں کہ انٹر نیٹ  کی مختلف سائیٹوں نے ایسے کلپ اور تصاویر شائع کی ہیں جن میں داعش گروپ کے جنگجوؤں کو عام شہریوں اور بےگناہ شہریوں کو انتہائی بے دردی سے قتل کرتے دکھایا گیا ہے ۔داعش کے اسطرح کے تمام اقدامات شرعی،دینی۔اسلامی اور انسانی اصولوں کی کھلی خلاف ورزی ہے اور ان مجرمانہ اقدامات کی کسی بھی صورت میں توجیہ نہیں کی جاسکتی۔
داعش ایک ایسا گروہ ہے جو اپنے مقاصد کے حصول کے لئے ہرطرح کے جرائم کو جائز سمجھتا ہے ۔عراق کے مختلف شہروں  میں عام شہریوں  من جملہ عورتوں ،بچوں اور بوڑھوں کا وحشیانہ قتل عام اس بات کی واضح دلیل ہے کہ یہ گروہ انسانیت کے مقام سے گر کر حیوانیت کے دائرے میں آچکا ہے ۔داعش کے ان غیر انسانی اقدامات کو دیکھ کر انسانی حقوق کی عالمی تنظیم ہیومن رائٹ واچ نے اپنی تشویش کا اظہار کرتے ہوئے خبر دار کیا ہے کہ موصل میں عورتوں کو سخت خطرات کا سامنا ہے ۔
داعش نامی یہ گروہ عورتوں ،مردوں اور بچوں پر ظلم وستم کے علاوہ آثار قدیمہ اور بعض ثقافتی آثار کو بھی تباہ وبرباد کررہا ہے ۔داعش کی ان حرکتوں  نے نوے کے عشرے کے طالبان گروہ کی یادوں کو تازہ کردیا ہے جنہوں نے داعش کی طرح افغانستان میں انسانوں کے ساتھ ساتھ آثار قدیمہ کو تباہ کرنے میں کوئی کسر باقی نہیں چھوڑی تھی۔
داعش گروہ انسانوں کے قتل عام ،اور آثار قدیمہ  کی تباہی کے علاوہ انبیا کے مزارات اور اصحاب رسول کی قبور کی مسماری کو دینی فریضہ سمجھتا ہے ۔داعش نے عراق کے شہر موصل پر حملہ کرکے حضرت یونس اور حضرت دانیال نبی کے مزارات کی بے حرمتی کرکے تمام عالم اسلام کے دلوں کو مجروح کردیا ہے۔داعش گروہ جو اپنے آپ کو عراق اور شام میں اسلامی حکومت کے قیام کا داعی گردانتا ہے اسکے حالیہ اقدامات سے ثابت ہوگیا ہے کہ دہشتگردوں کا یہ ٹولہ کسی بھی اسلامی،دینی اور انسانی اصولوں کو قبول نہیں کرتا۔
سعودی عرب اور قطر علاقے کے وہ ممالک ہیں جو شروع دن سے شام میں داعش گروہ کی مسلسل حمایت کررہے ہیں اور اب اس گروہ نے شام تک اپنے شاخیں پھیلا لی ہیں لیکن اس میں بھی کوئی شک و شبہ نہیں کہ  داعش نے اپنے غیر انسانی اقدامات کی بدولت شام اور عراق میں جو آگ بھڑکائی ہے وہ بہت جلد سعودی عرب اور قطر کو بھی اپنی لپیٹ میں لے لےگی اور اگر اس گروہ کی سرگرمیوں کو سنجیدہ نہیں لیا گیا تو پورا خطہ  بھی اسکی لپیٹ میں آسکتا ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۴۲


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*

Quds cartoon 2018
پیام امام خامنه ای به مسلمانان جهان به مناسبت حج 2016
We are All Zakzaky
telegram