• ایران کے مقابلے میں سعودی عرب کی پالیسی کا تجزیہ، روزنامہ نیویارک ٹائمز میں

    مشرق وسطی کے حالات کی تحلیل ایران اور سعودی عرب کی رقابت کی بنیاد ایک عرصے سے تحلیل گروں اور ناظروں کی توجہ کا مرکز بنی ہوئی ہے ،لیکن ایسے حالات میں کہ جب ایران نے اپنی طرف سے کئی بار تناو کو کم کرنے کے لیےسنجیدہ اقدامات کیے ہیں معلوم نہیں کہ سعودی کیوں ایران کے ساتھ رقابت کی پالیسی پر اڑے ہوئے ہیں اور اس ہٹ دھرمی کا خود اس کے لیے کیا نتیجہ نکلے گا ؟

    مزید ...
  • ایک سوپر پاور کے زوال کی نشانیاں

    جب ہمیں ایک ملک کا سامنا کرنا پڑتا ہے جو تسلسل کے ساتھ "واحد بڑی طاقت"، "آخری بڑی طاقت"، اور حتی کہ "عالمی ماورائی طاقت" کہلاتا ہے اور پھر جب وہی ملک کسی وقت بہت عجیب و غریب صورت سے دچار ہوکر کچھ بھی نہیں کہلاتا تو انسان شدید حیرت سے دوچار ہوتا ہے۔

    مزید ...
  • شام میں روس کے مقابلے میں امریکہ کی حکمت عملی کیا ہو گی؟

    روس کے ہوائی حملوں کے باوجود مسلح گروہوں کے حامیوں کی حکومت کو بدلنے کی کوشش جاری رکھنے کی پہلی علامت گذشتہ ہفتے ظاہر ہوئی کہ جب سعودی عرب کے وزیر خارجہ عادل الجبیر نے اپنے مغربی منصبداروں کے بر خلاف شام کو دھمکی دی کہ وہ زبردستی حکومت کو بدلنے کے لیے لمبی جنگ چھیڑنے کے لیے تیار ہے ۔

    مزید ...
  • آل سعود کا حج سے وہابیت کی تبلیغ کا ناجائز فائدہ

    سعودیہ والے حج کے مراسم میں مسلمانوں کو پر امن موقعہ فراہم کرنے کے بجائے سر زمین حجاز پر اس سنہری موقعے سے وہابیت کی تبلیغ کی راہ میں فائدہ اٹھاتے ہیں ۔اور یہ ایسی حالت میں ہو رہا ہے کہ گذشتہ ۳۸ سال کے عرصے میں ۵۶۷۲ حاجی سعودیہ کی ناقص کار کردگی کی قربانی بن چکے ہیں ۔

    مزید ...
  • جرمنی کی طرف سے پناہ گزینوں کی میزبانی کے پس پردہ عوامل

    پناہ گزین کہ جن میں زیادہ تر عراق اور شام کے باشندے ہیں جرمنی کے صدر اعظم آنگلا مرکل کی تصویریں ہاتھ میں لے کر اور پلے کارڈ ہاتھوں میں اٹھا کر نکلتے ہیں جن پر جرمنی کا شکریہ ادا کرنے جیسے جملے دکھائی دیتے ہیں۔

    مزید ...
  • شامیوں کو بے وطن کرنے کے پیچھے کس کا ہاتھ؟

    مشرقی یورپ سے مغرب کی طرف جو پناہ گزینوں کا ایک سیلاب رواں ہے اور جس کی وجہ سے یورپ کے اندر بحث چھڑ گئی ہے اس کے خود بخود ہونے کا احتمال بہت کم ہے ،بلکہ ایسا معلوم ہوتا ہے کہ کہ یہ کام منصوبہ بند طریقے پر ہو رہا ہے اور صہیونی حکومت کی مدد سے اس کے پیچھے ترکی کا ہاتھ ہے ۔

    مزید ...
  • آیت اللہ سیستانی اور اسلامی جمہوریہ ایران کے درمیان روابط پر تحلیلی نگاہ

    عراق کے شہر نجف اشرف میں مقیم مرجع تقلید حضرت آیت اللہ العظمی سید علی سیستانی اور اسلامی جمہوریہ ایران کے سلسلے میں مثبت اور اچھے روابط کے سلسلے میں شک و تردید پیدا کرنا عالم اسلام کے دشمنوں کی صرف ایک سازش اور اپنے استعماری اور استکباری طاقتوں کا اپنے مقاصد کےحصول کےلیےایک حربہ ہے ۔

    مزید ...
  • ایران کے متعلق بے بنیاد خبریں چھاپنے کا مقصد سعودی عرب کے جرائم سے توجہ ہٹانا ہے

    سعودی عرب کے مظالم اب کسی پر بھی ذرہ برابر پوشیدہ نہیں رہے اور مسلمانوں کا ناحق خون بہانے کے بعد جس میں نہتے عوام، خواتین اور معصوم بچے شامل ہیں؛ کوئی بھی منصف مزاج انسان اسکی حمایت نہیں کر سکتا۔ یہی وجہ ہے کہ سعودی عرب کی نیوز ایجنسیاں اور ان کے تابع دوسرے ذرائع ابلاغ اس قسم کی بیہودہ اور بے بنیاد خبریں شائع کرکے عوام کی توجہ کو سعودی عرب کے جرائم سے موڑنا چاہتے ہیں.

    مزید ...
  • ترکی اور آل سعود اپنے ہی بنائے ہوئے جال میں گرفتار

    تکفیری دہشت گرد گروہ داعش کی جانب سے اپنے تعین کردہ منصوبوں کو عملی جامہ پہنائے جانے میں مکمل ناکامی اور غیر انسانی اقدامات کی بدولت عالم اسلام اور دنیا میں شدید بدنامی کے باعث اب ترکی اس سے مقابلے کا فیصہ کر چکا ہے تاکہ اس طرح ایک طرف اس دہشت گرد گروہ کی حمایت کا داغ اپنے دامن سے دھو سکے اور دوسری طرف داعش سے خود کو درپیش خطرات کا مقابلہ کر سکے۔

    مزید ...
  • ترکی اور اسرائیل تعلقات کا مستقبل

    شام میں بحران کے آغاز سے ترکی کی خارجہ پالیسیوں نے نہ صرف خطے میں اسلامی مزاحمتی بلاک کو شدید نقصانات پہنچائے بلکہ ساتھ ہی ساتھ اسرائیل کی غاصب صہیونی رژیم کو بھی بہت سے اسٹریٹجک مواقع فراہم کر دیے۔

    مزید ...
  • ہمسایہ کوہمسایہ سے لڑانا امریکا کی عالمی سیاست

    امریکا کے صدر باراک اوبامہ کی طرف سے جن پالیسیوں کا اعلان کیا گیا ہے ان میں بھی تاکید کی گئی ہے کہ امریکا نے وسیع پیمانے پر فوجیں بھیجنے کی پالیسی کو ترک کر دیا ہے اور اس کے بدلے میں اس نے اپنے اتحادیوں کی فوجی طاقت کو تقویت پہنچانے کی پالیسی اختیار کی ہے جس کے لئےاس نے ان ملکوں میں ہتھیار بھیجنے اور فوجی مشاورین ارسال کرنے کا طریقہ اختیار کیا ہےتاکہ وہ ان کی فوجوں کو ٹریننگ دے سکیں۔

    مزید ...
  • ایران نے ’’شیطان بزرگ‘‘ کو گھٹنے ٹیکنے پر مجبور کر دیا: مصری تجزیہ نگار

    مصر کے ایک نامور تجزیہ نگار نے ایران اور پانچ جمع ایک کے درمیان جوہری مذاکرات کے اختتام کو مشرق وسطی کی ملتوں کے لیے بہترین درس قرار دیا اور تاکید کی : ایران نے بڑے شیطان کو اعتراف کرنے پر مجبور کر دیا ۔

    مزید ...
  • ایرانی جوہری معاہدہ اور نیتن یاہو کی بو کھلاہٹ و ہنگامہ خیزی

    نیتن یاہو نے سعودی عرب ،قطر، لاطینی امریکہ غرض دنیا کے ہر کونے میں اسلامی جمہوریہ ایران اور چھ عالمی طاقتوں کے درمیان معاہدے کو سبوتاژ کرنے کیلئے مدد کی طلب کی لیکن ہرجگہ اسے اسلامی جمہوریہ ایران کی مخلصانہ کاوشوں کی وجہ سے دھتکارا گیا اور آخر کار ناکام ہوکر اسے منھ کی کھانی پڑی ۔

    مزید ...
  • روسی نیوز ایجنسی کا امام خامنہ ای کے دور زعامت پر تجزیہ

    اگر آقائی [امام] خامنہ ای کی ۲۶ سال کی رہبری پر ایک نظر ڈالیں تو ہمیں معلوم ہو جائے گا کہ آپ نہ صرف ایک دینی اور مذہبی شخصیت ہیں بلکہ ایک تجربہ کار کہنہ مشق سیاست مدار بھی ہیں کہ جو ایران کو ہر نشیب و فراز سے نکال کر آگے لے جانے میں کامیاب ہوئے ہیں۔ بہر صورت آپ کی سیاست اور رہبری کے نتیجے میں ایران نے مشرق وسطی میں اپنے کلیدی دشمنوں صدام حسین اور طالبان کو ٹھکانے لگانے میں کامیابی حاصل کی ہے ،اور اگر بالقوہ ایران کو کچھ حادثے پیش آنےو الے تھے تو ان سے عبور کر پایا ہے ۔

    مزید ...
  • سعودی جارحیت یمن ٹائمز کے ایڈیٹر کی نظر میں

    مذکورہ صحافی نے جو حالات بیان کئے اس سے معلوم ہوتا ہے کہ یمن میں نارمل صورتحال تھی، یعنی سعودی و اتحادی بمباری کا جواز ہی نہیں تھا۔ منصور ہادی عبد ربہ یمن چھوڑ کر فرار ہوچکا تھا۔ اگر مستعفی و مفرور صدر کے کہنے پر یمن میں سعودی مداخلت جائز قرار دی گئی ہے تو افغان صدر کے کہنے پر سوویت یونین کا افغانستان میں داخل ہونا بھی جائز تھا، اور اگر وہ جائز تھا تو سعودی و خلیجی عرب شیوخ نے امریکا اور یورپ کے ساتھ مل کر افغانستان کی اس حکومت کے خلاف جنگ کیوں کی، جو سوویت یونین کی اتحادی تھی اور اگر سوویت یونین سامراج تھا تو امریکا اور یورپی ممالک بھی تو سامراج ہی تھے۔ سعودی و اتحادی عرب غیر نمائندہ حکمران کل بھی غلط تھے اور آج بھی غلطی پر ہیں۔

    مزید ...
  • محمد کاظم انبار لوئی کا مراسلہ:

    ایران دنیا میں طاقتوں کے توازن کی چابی

    ب ایران ایرانیوں کے اختیار میں ہے تو ملت ایران دنیا میں طاقت کے توازن کے میدان میں پہلے نمبر پر ہے ۔امریکی اگر ایران پر حملہ کرنے کی جرائت نہیں کرتے تو اس کی وجہ یہ نہیں ہے کہ ان کے پاس فوجی اور لیجسٹیکی طاقت نہیں ہےبلکہ وہ ایران کی ملت کے ہاضمے کی طاقت سے ڈرتے ہیں ۔ وہ ملت کہ جس نے روم ،یونان ، اعراب اور مغولوں کو اپنے اندر ہضم کر لیا اور اسی طرح اپنے پاوں پر کھڑی ہے ۔

    مزید ...
  • پاکستان میں آل سعود کی آخری اُمید "مذہبی" جماعتیں

    سعودی فرمانروا نے 45 سالہ پرانے وزیر خارجہ سعود الفیصل اور ولی عہد مقرن بن عبدالعزیز کو ان کے عہدوں سے برخواست کر دیا ہے اور ان کی جگہ بالترتیب امریکہ میں تعینات سفیر احمد الجبیر اور محمد بن نائف کو نامزد کر دیا ہے اور ساتھ ہی ساتھ اپنے 30 سالہ ناتجربہ کار بیٹے کو وزیر دفاع کے ساتھ ساتھ نائب ولی عہد بھی مقرر کر دیا ہے۔ یہ امر اس بات کا مظہر ہے کہ سعودی عرب اس جنگ کے نتیجے میں سفارتی میدان و داخلی میدان دونوں میں بری طرح ناکامی کے درپے ہے اور کسی بھی جنگ کے دوران اتنی بڑی تبدیلی کسی لیڈرشپ کی بوکھلاہٹ کی نشاندہی کرتی ہے۔

    مزید ...
  • امام کعبہ، کعبہ سے پاکستان پارلیمنٹ تک!!

    ہمیں دیکھنا ہوگا کہ کیا آلِ سعود اور حرمین شریفین ایک ہی چیز ہیں؟ بلاشبہ آلِ سعود کی شہنشاہیت کو لاحق خطرات کسی بھی طرح حرمین شریفین کے لئے خطرہ نہیں ہیں۔ آخری تجزیے میں آلِ سعود خطے میں نفرت کے نئے بیج بو رہا ہے، جو اپنے تباہ کن اثرات کے ساتھ ظاہر ہوں گے

    مزید ...
  • واشنگٹن پوسٹ:

    ایران کی آج کی کامیابیوں کے پیچھے آیت اللہ خامنہ ای کا نبوغ اور ان کی بے پناہ صلاحیتوں کا ہاتھ ہے

    ایران کے امور میں امریکہ کی وزارت خارجہ کے سابقہ ماہر اور خارجی روابط کے فکری مرکز کی کمیٹی کے رکن اعلی نے واشنگٹن پوسٹ میں ایک مقالے میں لکھا ہے: ایران اپنے موجودہ محصولات میں اس ملک کے عظیم المرتبت رہبر کی اعلی صلاحیتوں کا مرہون منت ہے ۔

    مزید ...
  • ایرانی تحلیلگرعلی رضا کریمی کی ڈائری:

    نیتن یاہو کے پاس کہنے کے لیے کچھ نہیں تھا / ان کیچووں کو رینگنے دو

    امریکی کانگریس میں نیتن یاہو کی تقریر کا اگر نچوڑ پیش کریں تو گذشتہ کیے گیے تکراری کھوکھلے دعووں کے علاوہ اس میں سے کچھ نہیں نکلے گا ؛ایران پر اعتماد نہ کریں ،لیکن اس تکراری مضمون کو اب دنیا نہیں ماننے والی ہے۔

    مزید ...
  • گلوبل ریسرچ کی رپورٹ :

    دنیا کے لیے واشنگٹن کا شیطانی نسخہ /امریکی سامراجیت کی بقا دہشت گردانہ اقدامات کی رہین منت

    داعش ہو یا بوکو حرام اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا ،ضروری امریکی مفادات کی حفاظت ہے اور اس کے لیے سب سے بہتر راستہ بناوٹی دائمی جنگی میدان ایجاد کرنا ہے ۔

    مزید ...
  • امریکا، اسرائیل اختلافات کے ڈرامے کی حقیقت

    امریکا کے شہر نیویارک سے شائع ہونے والے سب سے بڑے روزنامہ نیویارک ٹائمز میں کئی زاویوں سے امریکی اسرائیلی اختلافات کو بڑھا چڑھا کر پیش کیا گیا اور تاحال یہ سلسلہ جاری ہے۔ مشرق وسطٰی کے نامور تجزیہ نگار و دانشوروں نے بھی اس میں حصہ ڈالا ہے۔ لیکن امر واقعہ یہ ہے کہ فلسطین کی مقدس سرزمین پر ناجائز قبضہ کرکے اس کے وسیع علاقے کا نام اسرائیل قرار دے کر اسے ریاست یا ملک بنانے کی جعلسازی سے لے کر اس کی تاحال بقا و دوام میں برطانیہ اور اس سے بھی بڑھ کر امریکی حکومت نے ہی قائدانہ کردار ادا کیا ہے۔ امریکی مقتدر ادارے اور شخصیات کی حمایت اور مدد درحقیقت اس ناجائز و غاصب جعلی ریاست کے لئے آکسیجن کا کام دیتی آئی ہے۔ امریکا کی اس نامناسب و بے جا حمایت اور مدد کی کئی مثالیں موجود ہیں۔

    مزید ...
  • دہشتگردوں کا نیٹ ورک، جو آنکھوں سے اوجھل ہے

    پہلے سیاسی جماعتوں یا سیاسی شخصیات جو کام کرائے کے قاتلوں سے کرواتی تھیں، جہاد افغانستان کے بعد سے یہ کام جہاد کے نام پہ منظم ہونے والے دہشت گردوں کے مختلف گروپ انجام دے رہے ہیں۔ ابتدائی طور پر پاکستان دشنمن عناصر کی پہچان کے آغاز کے لئے اتنا کافی ہے، جوں جوں ہر شہری دقت کرتا جائے گا، سارے پردے اٹھتے جائیں گے، نیکی کی طرف بڑھیں گے تو اللہ کریم فرقان عطا کرے گا۔ ذہن کھلے رکھیں اور آگے بڑھیں، یاد رکھیں، اس بڑے سیناریو میں احمد لدھیانوی جیسے لوگ ایک چھوٹی سی پدی کے علاوہ کچھ نہیں۔

    مزید ...
Quds cartoon 2018
پیام امام خامنه ای به مسلمانان جهان به مناسبت حج 2016
We are All Zakzaky
telegram