مولانا سمیع الحق، صاحب علم شخصیت تھے: ساجدنقوی

مولانا سمیع الحق، صاحب علم شخصیت تھے: ساجدنقوی

مولاناسمیع الحق جیسی قومی اور بین الاقوامی شخصیت کا یوں بے یارو مدد گار قتل ہونا بہت سے سوالات کو جنم دے رہاہے، اس سلسلے میں تمام پہلوﺅں کا جائزہ لیا جائے اور اعلیٰ سطحی تحقیقات کرکے اصل قاتلوں تک نہ صرف پہنچا جائے بلکہ ان کو کیفرکردار تک پہنچایاجائے۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔  قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے مولانا سمیع الحق کی رحلت پر گہرے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ مولانا سمیع الحق صاحب دانش شخصیت کےساتھ نفاذ شریعت اور وحدت امت کیلئے بھرپور خدمات تھیں، مولانا سے تمام عمر احترام ، ایثار اور محبت کا رشتہ رہا، مولانا پر بے یارمددگاری کے عالم میں قاتلانہ حملہ انتہائی تشویشناک، تمام پہلوﺅں کا جائزہ لے کراور اعلیٰ سطحی تحقیقات کے تناظر میں قاتلوں کو کیفرکردار تک پہنچایا جائے، دھرنا قیادت سے ہونیوالے معاہدہ میں نقائص ہیں، جن بے گناہ اور غریب افراد کا نقصان ہوا ان کا ازالہ کیسے ہوگا؟
    قائدملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے جمعیت علمائے اسلام (س)کے سربراہ، دارالعلوم حقانیہ اکوڑہ خٹک کے مہتمم اور بزرگ عالم دین مولانا سمیع الحق کے قاتلانہ حملے میں رحلت پر گہرے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ مولانا سمیع الحق صاحب دانش شخصیت ہونے کے ساتھ ساتھ ان کا نفاذ شریعت کے حوالے سے جو کردار رہا اور جس طرح انہوںنے یہ تحریک چلائی اس کی نظیر کم ہی ملتی ہے، مولانا سمیع الحق ملک کی ان چند گنی چنی شخصیات میں سے ایک تھیں جو اتحاد امت کے بانیان میں سے تھیں، ملی یکجہتی کونسل کے قیام کے سلسلے میں مولانا سمیع الحق اور ہم نے مل کر بنیاد رکھی اور پھر اسی کی کوکھ سے متحدہ مجلس عمل نے جنم لیا، مولانا سمیع الحق ایسی شخصیت تھے جنہوںنے تمام تر دباﺅ کے باوجود اتحاد بین المسلمین کی کوششوں کو ساری عمر جاری رکھا، ان کی رحلت سے پیدا ہونیوالا خلا پورا کرنے کی ضرورت ہے۔ مولانا کےساتھ تمام عمر احترام، ایثااور محبت کا رشتہ رہا، کئی بار مولانا سے ملاقات کےلئے دارالعلوم اکوڑہ خٹک کا دورہ کیا ان میں ایک ایسا یاد گار دورہ بھی ہے جہاں ہزاروں طلاب کی موجودگی میں مولانا سمیع الحق نے ہمارے وفد کا محبت و ایثار سے بھرپور استقبال کیا اور دارالعلوم کے مختلف شعبوں کا دورہ کرایا ۔ مولاناسمیع الحق جیسی قومی اور بین الاقوامی شخصیت کا یوں بے یارو مدد گار قتل ہونا بہت سے سوالات کو جنم دے رہاہے، اس سلسلے میں تمام پہلوﺅں کا جائزہ لیا جائے اور اعلیٰ سطحی تحقیقات کرکے اصل قاتلوں تک نہ صرف پہنچا جائے بلکہ ان کو کیفرکردار تک پہنچایاجائے۔آخر میں انہوںنے مولانا سمیع الحق کی دینی، ملی اور سیاسی خدمات کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے پسماندگان سے دلی اظہار تعزیت کرتے ہوئے کہاکہ اس غم کی گھڑی میں سوگواران کے ساتھ شریک ہیں۔
    دوسری جانب انہوںنے گزشتہ رات دھرنا اور حکومت کے درمیان ہونےوالے باہمی معاہدے پرتبصرہ کرتے ہوئے کہاکہ اس معاہدہ میں نقائص ہیں اور مختلف سوالات جنم لے رہے ہیں ،دھرنا کے نتیجہ میں تباہ ہونیوالی کروڑوں روپے کی املاک ، موٹرسا ئیکلوں اور گاڑیوں کا معاوضہ کون دےگا؟جن غریب مزدوروں کی دیہاڑی کا حرج ہوا، جن غریبوں کے ٹھیلے لوٹے گئے ،جن غریب رکشہ ڈرائیورز کے روزگار کا ذریعہ جلا دیاگیا اور جن کی گاڑیوں کو تباہ کیا گیا انکا معاوضہ کون ادا کرےگا؟ اگر اس حوالے سے عوام کو کوئی قانونی کور فراہم نہیں کیاگیا تو اس سلسلے میں بھی حکومت کوتوجہ دینا چاہیے اور غریب افراد سمیت ملکی املاک کے ہونیوالے نقصان کے ازالے کا مضبوط طریق کار وضع ہونا چاہیئے اور اس کی روشنی میں اقدامات ہونے چاہیئں۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۴۲


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*

haj 2018
We are All Zakzaky
telegram