مذہبی منافرت سے نمٹنے کے لئے علماء نے سر جوڑ لئے

  • News Code : 860194
  • Source : ابنا خصوصی
Brief

غلط فہمیوں کے تدارک کے لیے اجتماعات میں شرکت، رابطے ناگزیر قرار، ورکشاپ میں اسکالر بھی شریک

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ کراچی؛ مختلف مسالک کے علمائے کرام نے مذہبی منافرت کو کم کرنے کے لیے ایکد وسرے کے مدارس اور مساجد میں جانے سمیت باہمی رابطوں کی کوششیں شروع کر دیں اور جمعہ کے اجتماعات سمیت درس و تدریس میں بھی انتشار و تشدد پسندانہ رویوں کی نفی کرنے کا بھی اعلان کر دیا۔
تفصیلات کے مطابق مختلف مسالک کے علمائے کرام پر مشتمل ’’بین المسالک ہم آہنگی اور مفاہمت‘‘ کے عنوان سے ۳ روزہ ورکشاپ کا انعقاد مقامی ہوٹل میں شروع ہو گیا، جن میں جماعت اسلامی کے مرکزی نائب امیر و سابق رکن قومی اسمبلی اسد اللہ بھٹو، جامعہ صفہ بلدیہ ٹاؤن  کے نائب مہتمم و معروف اسکالر مفتی محمد زبیر، جمعیت علمائے پاکستان سندھ کے صدر سید عقیل انجم قادری، اسلامی یکجہتی کونسل کے جنرل سیکریٹری علامہ عبد الخالق فریدی، علامہ شاہ حسین گردیزی، معروف مذہبی اسکالر علی کرار نقوی، جامعہ ستاریہ کے مدرس مفتی سید مطیع الرحمن مکی، جامعہ عثمانیہ کے امام و خطیب ڈاکٹر محمد اسحاق عالم، اظہر حسین، خاتون اسکالر مسز امتیاز جاوید، مفتی محمد اسرار مدنی، معروف سماجی رہنما مجتبیٰ راٹھور، علام مرتضیٰ سمیت دیگر علمائے کرام شامل ہیں۔
 علمائے کرام نے اس موقع پر کہا کہ امت کے اندر انتشار کا خاتمہ باہمی مکالمے سے نہ کیا گیا تو اس سے مستقبل میں انتشار میں مزید اضافے کے خدشات ہیں۔ نئی نسل کو آگاہ کرنا ہو گا۔ موجودہ حالات اور اندورنی و بیرونی خطرات کے خاتمے کے لیے تمام مکاتب فکر کا اتحاد و غلط فہمیوں کا تدارک وقت کی سب سے اہم ضرورت ہے۔ جو انتشار و تشدد کی نفی کرتے ہوئے باہمی اتفاق و اتحاد اور محبت کو فروغ دیتے ہیں۔ تاہم تمام مکاتب فکر کے اکابر علما اور قائدین کی جانب سے اتحاد امت کے لیے کوششوں کی وجہ سے کسی بڑے تصادم سے بچا جا سکتا ہے۔ ورکشاپ میں فیصلہ کیا گیا کہ آئندہ وہ اپنے اپنے مسلک پر موجودہ رہنے کے بعد ایک دوسرے کی مساجد و مدارس میں جائیں گے ایک دوسروں کو مدعو بھی کریں گے۔ نوجوان شریک علمائے کرام کی جانب سے وٹس ایپ گروپ بنایا گیا کہ آئندہ وہ اس سے رابطے میں رہیں گے۔ نوجوان علمائے کرام میں ادارہ امن و تعلیم کی جانب سے سرٹیفکیٹس بھی تقسیم کئے گئے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۴۲


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*

Mourining of Imam Hossein
پیام امام خامنه ای به مسلمانان جهان به مناسبت حج 2016
We are All Zakzaky
telegram