اصغریہ علم و عمل تحریک کے مرکزی صدر:

رہبر معظم کی بصیرت کے زیر سایہ بیدار ملت نے صہیونیت کو ہر محاذ پہ ذلت آمیز شکست دی

رہبر معظم کی بصیرت کے زیر سایہ بیدار ملت نے صہیونیت کو ہر محاذ پہ ذلت آمیز شکست دی

مغرب پرست افراد کی نارضگی اور ایران میں مہنگائی کی وجہ سے ہونے والے مظاہروں کو نظام ولایت فقیہ کے خلاف احتجاج بنا کر میڈیا میں پیش کرنا امریکہ و اسرائیل کی ناکام کوشش ثابت ہوگی۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ اصغریہ علم و عمل تحریک پاکستان کے مرکزی صدر سید پسند علی رضوی نے اپنے مرکزی دفتر حیدرآباد سے جاری بیان میں کہا ہے کہ ایران میں مہنگائی کی وجہ سے ہونے والے مظاہروں کو نظام ولایت فقیہ کے خلاف احتجاج بنا کر میڈیا میں پیش کرنا امریکہ و اسرائیل کی ناکام کوشش ثابت ہوگی، میڈیا پہ صہیونیت قابض ہے، وہ جو چاہتا ہے ہر مسئلے کو اس طرح دیکھاتا ہے ، مغرب پرست افراد کی نارضگی اور ایران میں مہنگائی کی وجہ سے ہونے والے مظاہروں کو نظام ولایت فقیہ کے خلاف احتجاج بنا کر میڈیا میں پیش کرنا امریکہ و اسرائیل کی ناکام کوشش ثابت ہوگی، ایرانی قوم نے ولایت فقیہ کے لیئے لازوال قربانیاں دی ہیں، یہ ممکن نہیں کے بیدار قوم اپنے پیاروں کے لہو کے تقدس کو بھول جائیں، اور ان کے مقدس لہوں کے بدولت آج ایک منظم اور لازوال نظام قائم ہوا ہے، جس قوم کے پاس بیدار رھبر موجود ہو اس قوم کو کوئی بھی گمراہ نہیں کرسکتا، رھبر معظم سید علی خامنہ ای کی بصیرت سے ہی بیدار ملت نے امریکہ ، اسرائیل صہویونی ریاست کوہر محاذ پہ ذلت آمیز شکست دی ہے، یہ روز روشن کی طرح عیاں حقیقت ہے کہ دہشتگردی اورملک کو خانہ جنگی کی طرف دھکیلنے کی سازش ہمیشہ استعماری ایجنٹ کرتے ہیں، ٹرمپ نے احتجاج کی حمایت کرکے ثابت کردیا کہ اس مظاہروں میں دہشتگردی کرنے والے اس کے ہم فکر ہیں جو کہ عالمی دہشتگردی کہ زمہ دار ہیں، سازش کرنے والی قوت کو سوچنا چائیے کہ جس قوم نے شام کے پرچم کو سعودی عرب کے حلق سے نکال کر شامی قوم کے حوالے کیا وہ اپنے ملک کے خلاف چند استعماری ایجنٹس کی سازش کو کبھی کامیاب نہیں ہونے دے گی۔ انہوں نے کہا کہ انقلاب اسلامی کے بعد متعدد مرتبہ مختلف بہانوں کے ذریعے عوام کو حکومت اور انقلاب کے مقابلے میں سڑکوں پر لانے کی کوشش کی گئی ہے۔ ایرانی سال 1377 میں تہران یونیورسٹی میں پیش آنے والے ایک واقعہ کے بعد متشدد مظاہروں کا سلسلہ شروع کیا گیا، پھر 1388 میں انتخابات کے بعد سبز رنگ کا مخملی فتنہ انجام پایا اور اب 1396 میں ایک نئی لہر کا آغاز کیا گیا۔ تھوڑے تھوڑے وقفے کے بعد اس قسم کی کارروائیاں اس بات کا واضح ثبوت ہیں کہ ان حرکتوں کے پیچھے منظم قوتوں کا ہاتھ موجود ہے، جو عام عوام کو اسلامی انقلاب کے مقابلے میں لانے کی کوشش کر رہی ہیں، لیکن ان کی یہ سازش اپنے انجام کو نہیں پہنچے گی۔ امریکہ اور صیہونی حکومت جیسی شیطانی قوتوں کی بھول ہے کہ وہ اس ذریعے سے انقلاب کو نقصان پہنچا سکیں گیں۔ اس طرح کے کھیل تماشے کے ذریعے وہ چند ایسے بے راہ روی کے شکار نوجوانوں کو تو گمراہ کرسکتے ہیں کہ جن کو ہر روز یہ پیغام دیا جاتا ہے کہ بس اب انقلاب کی شکست نزدیک ہے، لیکن وہ ایرانی عظیم قوم کو شکست نہیں دے سکتے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۴۲


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*

Quds cartoon 2018
پیام امام خامنه ای به مسلمانان جهان به مناسبت حج 2016
We are All Zakzaky
telegram