ماگام میں انجمن شرعی شیعیان کے اہتمام سے پُروقار محفل و جلوس میلاد النبیؐ

پشاور دھماکے کی شدید مذمت، تعلیمی اداروں پر دہشتگردانہ حملے درندگی کی انتہا: آغا حسن

  • News Code : 870766
  • Source : ابنا خصوصی
Brief

پشاور دھماکے کی شدید مذمت،تعلیمی اداروں پر دہشتگردانہ حملے درندگی کی انتہا۔ آغا حسن

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ سرینگر/ انجمن شرعی شیعیان جموں و کشمیر کے اہتمام سے ہفتہ وحدت کی تقریبات کے سلسلے میں امام باڑہ یاگی پورہ ماگام میں ایک پُروقار محفل میلاد منعقد ہوئی بعد ازاں تنظیم کے سربراہ اور سیئر حریت رہنما حجۃ الاسلام والمسلمین آغا سید حسن الموسوی الصفوی کی قیادت میں میر کمپلکس ماگام سے جلوس میلاد النبیؐ برآمد ہوا جو امام باڑہ یاگی پورہ ماگام میں اختتام پذیر ہوا۔
جلوس میں جامعہ باب العلم سے منسلک شاخہائے مکاتب کے ہزاروں طلباء و طالبات کے علاوہ عاشقان رسولؐ کی خاصی تعداد نے شرکت کی۔ امام باڑہ یاگی پورہ ماگام میں محفل میلاد سے خطاب کرتے ہوئے آغا حسن نے حضور سرور کائناتؐ کے اسو ۂ حسنہ کے مختلف گوشوں کی وضاحت کی۔
آغا صاحب نے کہا کہ نبی آخر الزمانؐ کو اللہ تعالیٰ نے ایک ایسے بگڑے معاشرے میں معبوث فرمایا جہاں ظلم و استحصال اور انسانی و روحانی اقدار کے ساتھ ساتھ انصاف و مساوات کا اس حد تک خاتمہ ہوچکا تھا کہ والد غیرت کے نام پر اپنی دختر کو زندہ درگور کرنے میں کوئی بھی خوف و تردد محسوس نہیں کرتا تھا۔ خانوادوں اور قبیلوں کے درمیان معمولی معاملے پر برسہا برس تک جنگیں لڑیں جارہی تھی۔ اس قدر بگڑے ہوئے معاشرے کی اصلاح کوئی معمولی کام نہیں تھا۔آپ ؐنے اپنے اخلاق حمیدہ ، جذبہ احترام آدمیت اور رحمت و شفقت سے دنیا کے جاہل ترین قوم عرب کو اسلام کے انسانیت ساز نصب العین کا پیرو کار بنایا۔
آغا صاحب نے مسلمانوں کے باہمی اتحاد و اخوت کے حوالے سے قرآن کریم کی آیات بینات اور رسول اکرمؐ کے تاکیدی ارشادات پر تفصیلی روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ امت مسلمہ کا باہمی اتحاد کوئی سیاسی مجبوری نہیں بلکہ ایک اہم دینی فریضہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان ارشادات کی روشنی میں فرقہ اور مسلک کے نام پر نفرت و تعصب کی اسلام میں کوئی گنجائش نہیں لیکن بدقسمتی سے اسلام دشمن عناصر نے ہمیشہ مختلف مسالک کے مسلمانوں کے درمیان فروعی اختلافات کو ہوا دیکر اپنے عزائم کی تکمیل کی ہر ممکن کوشش کی ہے۔
اگر اب بھی مسلمان استکباری قوتوں کی اس سازش کو ناکام بنانے کیلئے سنجیدہ نہیں ہوئے تو امت مسلمہ کا مستقبل مخدوش ہوکر رہے گا۔ اس موقعہ پر آغا حسن نے پشاور پاکستان میں ایگریکلچرل یونیورسٹی پر کئے گئے دہشتگردانہ حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کی۔ انہوں نے کہا کہ جو لوگ تعلیمی اداروں کو نشانہ بناکر اپنے مکروہ عزائم کی تکمیل کی ذہنیت رکھتے ہوں ان سے بڑھ کر کوئی بھی درندہ صفت نہیں ہوسکتا۔ آغا حسن نے دھماکے میں ہوئے جانی نقصان پر رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں اس طرح کے سانحات کا وقوع پذیر ہونا اس بات کا غماز ہے کہ پاکستان کو غیر مستحکم کرنے کیلئے جو قوتیں کافی عرصے سے سرگرم ہیں وہ آئندہ اس معاملے میں کس حد تک جاسکتی ہیں۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۴۲


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*

پیام امام خامنه ای به مسلمانان جهان به مناسبت حج 2016
We are All Zakzaky
telegram