شوپیان سانحہ کے خلاف بڈگا م میں انجمن شرعی شیعیان کا احتجاجی مظاہرہ

آغا حسن نے کشمیر سے متعلق اقوام متحدہ اور ایران کے بیانات کا خیر مقدم کیا

شوپیان سانحہ کے خلاف بڈگا م میں انجمن شرعی شیعیان کا احتجاجی مظاہرہ

آغا حسن نے کہا کہ شوپیان میں نہتے عوام پر فورسز کی بربریت کے حالیہ سانحہ سے ایک بار پھر بھارت کا خونین چہرہ دنیا کے سامنے بے نقاب ہوکر رہ گیا ہے

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ سرینگر/شوپیان میں حریت پسند عساکر اور بھارتی فورسز کے درمیان معرکہ آرائی کے آڑ میں نہتے عوام کے بے دریغ قتل عام کے حالیہ سانحہ کو ریاستی دہشتگردی کی ایک اور بھیانک کڑی قرار دیتے ہوئے انجمن شرعی شیعیان جموں و کشمیر کے سربراہ اور سیئر حریت رہنما حجۃ الاسلام والمسلمین آغا سید حسن الموسوی الصفوی نے کہا کہ بھارت کشمیری عوام کی برحق آواز کو دبانے کیلئے ظلم و بربریت کی ایک سیاہ تاریخ رقم کررہا ہے اور یہ بھارت کے بے پناہ مظالم کا ہی ردعمل ہے کہ ایک طرف کشمیری نوجوان عسکریت کی طرف مائل ہورہے ہیں اور دوسری طرف عوام سڑکوں پر آکر فوسز کی بندوقوں کے آگے سینہ تانے ہوئے مطالبہ آزادی دہرارہے ہیں۔ آغا حسن نے کہا کہ شوپیان میں نہتے عوام پر فورسز کی بربریت کے حالیہ سانحہ سے ایک بار پھر بھارت کا خونین چہرہ دنیا کے سامنے بے نقاب ہوکر رہ گیا ہے اور اس حوالے سے اقوام متحدہ انسانی حقوق کی تنظیموں اور اسلامی جمہوریہ ایران کے بیانات کشمیرکے زمینی حقائق کے عکاس ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عالمی برادری کو صرف بیانات پر اکتفا نہیں کرنا چاہیے بلکہ کشمیریوں کی نسل کشی کو روکنے کیلئے اپنی ذمہ داریاں پورا کرنا چاہیے۔ دریں اثنا سانحہ شوپیاں کے خلاف بطور احتجاج انجمن شرعی شیعیان کے اہتمام سے اکثر جمعہ مراکز پر احتجاجی مظاہرے کئے گئے۔ مرکزی امام باڑہ بڈگام میں نماز جمعہ کی ادائیگی کے بعد انجمن شرعی کے ہزاروں حامیوں نے سانحہ شوپیاں کے خلاف زور دار احتجاجی مظاہرہ کیا۔ مظاہرین کشمیریوں کے قتل عام کے خلاف اور اسلام اور آزادی کے حق میں نعرہ بازی کرتے ہوئے مین چوک بڈگام میں جمع ہوئے جہاں حجۃ الاسلام آغا سیدیوسف الموسوی نے سانحہ شوپیاں کے شہداء کو شاندار خراج عقیدت پیش کیا اور سینکڑوں زخمیوں کی جلد شفایابی کیلئے دعا کی۔  
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۴۲


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*

haj 2018
We are All Zakzaky
telegram