بھارت کو ایران کے ساتھ اپنی اصل حکمت عملی کو دوبارہ شروع کرنا چاہیے: بھارتی تجزیہ کار

بھارت کو ایران کے ساتھ اپنی اصل حکمت عملی کو دوبارہ شروع کرنا چاہیے: بھارتی تجزیہ کار

سوراجیت ایار نے کہا کہ بھارت اپنی پالیسیوں کے حوالے سے ایک اچھی پوزیشن رکھتا ہے اس لئے بھارت کو چاہیے کہ وہ اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ اپنی اصل حکمت عملی کو دوبارہ اپنائے.

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ بھارتی ماہر برائے عالمی اقتصادی امور نے کہا ہے کہ بھارت کو چاہیے کہ ایران کے ساتھ اپنی حقیقی حکمت عملی کو دوبارہ شروع کرے اور امریکی نااہلی کے حوالے سے ایک مستقل موقف اپنائے.

سوراجیت ایار نے کہا کہ بھارت اپنی پالیسیوں کے حوالے سے ایک اچھی پوزیشن رکھتا ہے اس لئے بھارت کو چاہیے کہ وہ اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ اپنی اصل حکمت عملی کو دوبارہ اپنائے.

انہوں نے ایران کی اقتصادی اور معیشی ترقی میں بھارت کے کردار کے حوالے سے کہا کہ بھارت ایران کا قریبی دوست ملک ہے اور ملازمتوں کے مواقعوں کی فراہمی سے ملکی معیشت پر مثبت اثر پڑتا ہے اور بھارتی کمپنیوں کی جانب سے ایران کو موقع دیا گیا ہے کہ وہ بھارتی کمپنیوں میں اشتراک کریں اور اس سے ملازمتوں کے موقعوں میں اضافہ ہو گا.

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ بھارت اگر اپنے اصل موقف کے ساتھ ایران کے ساتھ اپنی حکمت عملی کے سلسلے کو جاری رکھے تو ایران بھارت کو ایک قابل اعتماد اقتصادی اور معیشی شراکت دار سمجھتا ہے اور گزشتہ سال چابہار بندرگاہ کا منصوبہ مستقبل میں دونوں ممالک کے لئے فائدہ مند ثابت ہو گا اس سے یہ بات ظاہر ہوتی ہے کہ ایران اور بھارتی کئی میدانوں میں مل کر کام کر سکتے ہیں.

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۴۲


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*

Quds cartoon 2018
We are All Zakzaky
telegram