آغا حسن نے کابل میں ثقافتی مرکز پر خود کش حملے کی شدید مذمت کی

مزاحمتی قائدین کی رہائی کا خیرمقدم، دیگر محبوسین کی رہائی کا مطالبہ

آغا حسن نے کابل میں ثقافتی مرکز پر خود کش حملے کی شدید مذمت کی

آغا حسن نے کہا کہ شام اور عراق میں داعش کے مکمل صفایا کے بعد اب افغانستان کی سرزمین اس بدترین تکفیری گروہ کی آماجگاہ بنتی جارہی ہے جس کا سب سے بڑا ایجنڈا شیعہ مسلمانوں کا قتل عام ہے۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ سرینگر/انجمن شرعی شیعیان جموں و کشمیر کے سربراہ اور سیئر حریت رہنما حجۃ الاسلام والمسلمین آغا سید حسن الموسوی الصفوی نے افغانستان کے دارالحکومت کابل میں شیعہ برادری کے ثقافتی مرکز پر خود کش حملے کی پرزور الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اس دلخراش سانحہ میں ہوئے بھاری جانی نقصان پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا۔ آغا حسن نے کہا کہ شام اور عراق میں داعش کے مکمل صفایا کے بعد اب افغانستان کی سرزمین اس بدترین تکفیری گروہ کی آماجگاہ بنتی جارہی ہے جس کا سب سے بڑا ایجنڈا شیعہ مسلمانوں کا قتل عام ہے۔ آغا حسن نے اس سانحہ میں جاں بحق ہوئے افراد کے لواحقین سے تعزیت کی۔ آغا حسن نے دختران ملت کی سربراہ سیدہ آسیہ اندرابی ، فہمیدہ صوفی اور مسلم لیگ چیرمین مشتاق الاسلام کی رہائی کا خیرمقدم کرتے ہوئے جیلوں میں مقید دیگر مزاحمتی قائدین اور کارکنوں کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا۔ آغا حسن نے ریاستی انتظامیہ کی طرف سے سرکاری ملازمین پر سوشل میڈیا کے استعمال پر پابندی کو عامرانہ فیصلہ قرار دیتے ہوئے سرکاری حکم نامے کوآزادی اظہار پر قدغن کی بدترین مثال قرار دیا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۴۲


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*

Quds cartoon 2018
پیام امام خامنه ای به مسلمانان جهان به مناسبت حج 2016
We are All Zakzaky
telegram