شام پر جرائم پیشہ ٹرائیکا کی جارحیت (۲)

کیا شام پر حملے سے ایران اور شام کی پوزیشن کمزور ہوگئی؟

کیا شام پر حملے سے ایران اور شام کی پوزیشن کمزور ہوگئی؟

حملے کے بعد ہزاروں شامیوں نے سڑکوں پر آکر امریکی ـ فرانسیسی اور برطانوی حملوں کی ناکامی پر جشن سرور منایا۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ وال اسٹریٹ جرنل نے لکھا کہ ٹرمپ وسیع اور طویل حملوں کا خواہاں تھا لیکن ان کے مشیروں نے حالات کا جائزہ لینے کے بعد محدود حملوں پر رضامندی ظاہر کی تھی۔ ٹرمپ شام کو بھی ناکردہ گناہ کی سزا دینا چاہتے تھے اور ایران اور روس کے مقابلے میں اپنی طویل ناکامیوں کا ازالہ کرتے ہوئے روس اور ایران کو بھی مجبور کرنا چاہتے تھے کہ وہ شام میں امریکیوں کو پیچھے دھکیلنے کی قیمت ادا کریں۔
عجیب یہ ہے کہ ان کے مشیروں میں جان بولٹن بھی شامل ہیں جو امریکیوں کے درمیان بھی اور مغربی ایشیا میں بھی ایک خونخوار شخص کے عنوان سے جانے پہچانے جاتے ہیں لیکن وہ بھی طویل جنگ کے روادار نہیں تھے کیونکہ امریکی سب سمجھتے ہیں کہ نہ امریکہ 2000 کے عشرے کا امریکہ ہے اور نہ ہی شام افغانستان یا عراق ہے جن کے تمام ہتھیار امریکی حملے سے قبل تباہ کردیئے گئے تھے۔
وال اسٹریٹ جرنل کے مطابق، وزیر دفاع جیمز میٹس نے ٹرمپ کو احتیاط برتنے کی تجویز دی تھی اور ان کا خیال تھا کہ ایران اور روس کے ساتھ لڑنا بھڑنا کافی مہنگا پڑ سکتا ہے۔ میٹس نے تشویش ظاہر کی تھی کہ امریکہ [پہلی بار] مغربی ایشیا میں کوئی خاص حکمت عملی وضع کرنے سے قاصر ہے۔
روسی خیر ایجنسی اسپوتنیک کے مطابق، ٹرمپ نے ایران اور روس کو دوما میں کیمیاوی حملے کا ملزم ٹہرایا تھا جبکہ روسی صدر ویلادمیر پیوٹن نے کہا تھا کہ دوما میں کسی بھی کیمیاوی حملے کی افواہ بےبنیاد ہے۔
انھوں نے کہا تھا کہ امریکہ اور اس کے بین الاقوامی اور علاقائی حلیف در حقیقت دہشت گردوں کو سہارا دینے کے درپے ہیں۔
13 مارچ 2018 کو روسی افواج کے سراغرسانوں نے انکشاف کیا تھا کہ امریکہ اور برطانیہ دوما میں کیمیاوی حملے کا ڈھونگ رچانے کا منصوبہ رکھتے ہیں جس کے بعد وہ شام پر حملہ کرنا چاہتے ہیں۔
بہر حال ڈھونگ رچایا گیا، حملہ بھی ہؤا لیکن روس اور امریکہ کو مزید استحکام ملا اور کلنک کا ٹیکہ نصیب ہؤا جارحین کے بدنما چہروں کو۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۱۱۰


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*

Quds cartoon 2018
پیام امام خامنه ای به مسلمانان جهان به مناسبت حج 2016
We are All Zakzaky
telegram