فلسطین؛ نامعلوم افراد کی فائرنگ سے صہیونی خاخام ہلاک/ قسام: یہ پہلی مسلحانہ کارروائی تھی

فلسطین؛ نامعلوم افراد کی فائرنگ سے صہیونی خاخام ہلاک/ قسام: یہ پہلی مسلحانہ کارروائی تھی

صہیونی ذرائع ابلاغ نے اعلان کیا ہے کہ ہلاک ہوا شخص صہیونیوں کا مذہبی پیشوا "خاخام رزئیل شبیح" ہے جو معروف صہیونی "موشہ زار" کا بیٹا اور حفات گیلاد کا رہنے والا تھا۔

اہل البیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ مقبوضہ فلسطین کے شہر نابلس میں ایک صہیونی گاڑی پر کی گئی نامعلوم افراد کی فائرنگ کے نتیجے میں ایک صہیونی آبادکار ہلاک جبکہ چند دیگر افراد زخمی ہوئے ہیں۔
تفصیلات کے مطابق، فلسطین کے مقبوضہ مغربی کنارے کے شمالی شہر نابلس میں ایک یہودی کالونی کے قریب گاڑی پر نامعلوم افراد نے فائرنگ کی جس کی وجہ سے ایک صہیونی آبادکار کو سر کے حصے میں گولی ماری گئی جس کے فورا بعد اسے ہستپال منتقل کیا گیا لیکن کچھ ہی دیر میں اس کے واصل جہنم ہونے کی خبر شائع ہو گئی۔
اسرائیل کے عبرانی ٹی وی ’12‘ کے مطابق منگل کی شام نامعلوم مسلح افراد نے یہودی آباد کاروں کی ایک گاڑی پر فائرنگ کی جس کے نتیجے میں ایک صہیونی ہلاک ہوگیا جبکہ حملہ آور بہ حفاظت جائے وقوعہ سے فرار ہوگئے۔
عبرانی ٹی وی کے مطابق فائرنگ کے نتیجے میں یہودی آباد کار شدید زخمی ہوا جسے اسپتال منتقل کیا گیا تو ڈاکٹروں نے اس کی موت کی تصدیق کردی۔
صہیونی ذرائع ابلاغ نے اعلان کیا ہے کہ ہلاک ہوا شخص صہیونیوں کا مذہبی پیشوا یعنی "خاخام رزئیل شبیح" ہے جو معروف صہیونی "موشہ زار" کا بیٹا اور حفات گیلاد کا رہنے والا تھا۔
اطلاعات کے مطابق، مقتول کا باپ موشے زار فلسطینیوں کی اراضی غصب کرنے والے ایک گروپ کا سرغنہ ہے جس نے فلسطینیوں کی وسیع اراضی غصب کر رکھی ہے۔ موشے زار نابلس بلدیہ کے فلسطینی میئر بسام الشکعہ پر قاتلانہ حملے میں بھی ملوث بتایا جاتا ہے۔
واقعے کے فوری بعد اسرائیلی فوج کی بھاری نفری نے جائے وقوعہ کو گھیرے میں لے کر شواہد اکھٹے کیے۔ اسرائیلی فوج نے بورین قصبے کو ملانے والی تمام سڑکیں بند کردیں جس کے خلاف فلسطینی آبادی نے احتجاج کیا۔
عینی شاہدین نے بتایا کہ یہودی آباد کار کے قتل کے بعد اسرائیلی فوج نے جائے وقوعہ کے قریبی قصبوں تل اور صرۃ کا محاصرہ کرکے گھر گھر تلاشی کی کارروائی کی اور گھروں میں خواتین اور بچوں کو زدو کوب کیا۔

فلسطین کی اسلامی مزاحمتی تحریک حماس کی فوجی شاخ شہید عزالدین قسام بریگیڈ کے ترجمان نے تاکید کی ہے کہ گزشتہ رات کی کاروائی دشمن کے خلاف پہلا مسلحانہ اقدام تھا تاکہ دشمن کے رہنما اور ان کے حامی یہ جان لیں کہ وہ جس چیز سے خوفزدہ ہیں وہ قریب ہے۔

ابوعبیدہ نے ٹویٹ کیا ہے کہ صہیونی دشمن جس چیز سے خوفزدہ ہیں وہ قریب ہے اور یہ فلسطینیوں کی طرف سے پہلی مسلحہ کاروائی تھی۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۴۲


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*

Mourining of Imam Hossein
haj 2018
We are All Zakzaky
telegram