بلوچستان کے حقوق کی بات کرنیوالوں کی حکومت کو کبھی چلنے نہیں دیا گیا: سابق وزیراعلٰی بلوچستان

بلوچستان کے حقوق کی بات کرنیوالوں کی حکومت کو کبھی چلنے نہیں دیا گیا: سابق وزیراعلٰی بلوچستان

کوئٹہ میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بی این پی (مینگل) کے چیئرمین کا کہنا تھا کہ وہ قوم پرست نہیں، جو ذاتی مفادات کیلئے قوم کے اجتماعی مفادات کو قربان کر دیتے ہیں۔ سب سے بڑھ کر اصل، قوم پرست یہاں کے عوام ہیں، جو 70 سال سے ناانصافیوں کے شکار رہے ہیں۔ کسی بھی ملک کی پہچان اسکے ساحل اور وسائل سے ہوتی ہے۔

اہل بیت (ع) نیوز ایجنسی ۔ ابنا ۔ کی رپورٹ کے مطابق بلوچستان نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اور سابق وزیراعلٰی بلوچستان سردار اختر مینگل نے کہا ہے کہ بلوچستان میں مخصوص صف بندیاں نئی بات نہیں۔ یہ تو جمہوری اور آمریت ادوار میں بھی ہوتے چلے آ رہے ہیں۔ اصل قوم پرست یہاں کے عوام ہیں، جو 70 سال سے ظلم و ناانصافی کا شکار رہے ہیں۔
بلوچستان میں نسل پرستی، فرقہ پرستی اور قبائیلیت پرستی کو فروغ اس لئے دیا جارہا ہے، تاکہ صوبے کے عوام کو آپس میں دست وگریباں کرکے ان کی توجہ حقوق سے ہٹایا جاسکے۔ بلوچستان میں عوام کے حقوق کی بات کرنے والی حکومتوں کو کھبی بھی چلنے نہیں دیا گیا۔ اس کی واضح مثال 1970ء اور 1997ء کی حکومتیں ہیں، جہنیں وقت پورا ہونے سے پہلے سازشوں کا شکار بناکر گرا دیا گیا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ سردار اختر مینگل نے کہا کہ ڈھائی سالہ اقتدار کا فارمولہ دراصل بلوچستان کے وسائل کا سودا تھا، جو ذاتی اقتدار کی غرض سے بلوچستان کے وسائل کو کاروباری افراد کے ہاتھوں سودا کیا گیا۔ ہم نے کسی کی حکومت کو کمزور نہیں کیا۔ سردار ثناء اللہ زہری کے خلاف عدم اعتماد جمہوری عمل کا حصہ تھا۔ ہم نے عبدالقدوس بزنجو کی حمایت بلوچستان کے عوام کے اجتماعی مفادات کو مدنظر رکھ کر کیا۔ ان کے سامنے اہم نکات رکھے، جن میں لاپتہ افراد کی بازیابی اور کینسر ہسپتال کی تعمیر شامل تھا۔ قوم پرست وہ ہوتا ہے، جو عوام کے حقوق اور ان پر ہونے والی ظلم وناانصافی کے خلاف جدوجہد کرکے آواز اٹھاتا ہے۔ وہ قوم پرست نہیں، جو ذاتی مفادات کے لئے قوم کے اجتماعی مفادات کو قربان کر دیتے ہیں۔ سب سے بڑھ کر اصل، قوم پرست یہاں کے عوام ہیں، جو 70 سال سے ناانصافیوں کے شکار رہے ہیں۔ کسی بھی ملک کی پہچان اس کے ساحل اور وسائل سے ہوتی ہے۔

.......

/169


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*

Quds cartoon 2018
We are All Zakzaky
telegram