اسرائیل کے خلاف مذمتی بیان جاری کرنے میں سلامتی کونسل کی ناکامی

اسرائیل کے خلاف مذمتی بیان جاری کرنے میں سلامتی کونسل کی ناکامی

اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل اپنی غیر سرکاری نشست میں امریکہ کی مخالفت کی وجہ سے غزہ میں صہیونی ریاست کے متشددانہ اقدامات کی مذمت میں بیان جاری کرنے میں ناکام ہو گئی۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل امریکہ کے ویٹو کرنے کی وجہ سے صہیونی ریاست کی جارحیت کے خلاف مذمتی بیان جاری کرنے میں ناکام ہو گئی۔ دوسری جانب اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل نے یوم الارض کے موقع پر وطن واپسی پرامن ریلیوں پر صہیونی فوج کے متشددانہ اقدام کے بارے میں فوری تحقیقات کا مطالبہ کیا۔

جاثیہ نیوز کے مطابق، اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل اپنی غیر سرکاری نشست میں امریکہ کی مخالفت کی وجہ سے غزہ میں صہیونی ریاست کے متشددانہ اقدامات کی مذمت میں بیان جاری کرنے میں ناکام ہو گئی۔
یہ نشست عرب لیگ کے نمائندے کے عنوان سے کویت کی درخواست پر گزشتہ شب منعقد ہوئی۔
اقوام متحدہ میں کویت کے دائمی نمائندے نے سلامتی کونسل کے غیر سرکاری جلسے میں کہا کہ کویت قابض صہیونی ریاست کی جارحیت کہ جو فلسطینیوں کی کثیر تعداد کے شہید اور زخمی ہونے کا باعث بنی کی سخت الفاظ میں مذمت کرتا ہے اور سلامتی کونسل سے مطالبہ کرتا ہے کہ صہیونی ریاست کی جارحیت کے خلاف اور فلسطین کے عوام کی حمایت میں کوئی ٹھوس اقدام کرے۔
فلسطین کے نمائندے ریاض منصور، نے غزہ میں ۱۷ فلسطینیوں کی شہادت کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ اسرائیلی فوجیوں نے ملت فلسطین کے خلاف بھیانک جرائم کا ارتکاب کیا ہے۔
ریاض منصور نے اس جارحیت کے ذمہ داران کو ان کے کیفر کردار تک پہنچانے کا مطالبہ کرتے ہوئے سلامتی کونسل سے اس سلسلے میں اپنی ذمہ داری پر عمل کا مطالبہ کیا اور کہا کہ سلامتی کونسل کو چاہیے کہ ملت فلسطین کے دفاع کے لیے میدان عمل میں اترے۔
دوسری جانب اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل نے بھی غزہ میں فلسطینیوں کے قتل عام پر تشویش کا اظہار کیا اور اس بارے میں تحقیقات کے آغاز کے لیے ایک کمیٹی تشکیل دینے کا مطالبہ کیا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۴۲


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*

haj 2018
We are All Zakzaky
telegram