بنی سعود سے ٹرمپ کی بلیک میلنگ جاری؛

امریکہ کی نظر میں سعودی عرب ایک دوست نہیں بلکہ کمائی کا ذریعہ

امریکہ کی نظر میں سعودی عرب ایک دوست نہیں بلکہ کمائی کا ذریعہ

ڈونلڈ ٹرمپ نے حالیہ چند سالوں میں کئی مرتبہ سعودی عرب اور اس کے بادشاہ "سلمان بن عبدالعزیز" کی توہین کی ہے۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ بعض ممالک میں آل سعود کے حامی بڑے خوش ہیں کہ بنی سعود کو امریکی حمایت حاصل ہے، یہ وہی لوگ ہیں جو بنی سعود کی حمایت میں مظاہرے بھی کرتے ہیں لیکن جب امریکہ سعودیوں کے بارے میں کوئی اپنا موقف عیاں کرتے ہیں تو انہیں سانپ سونگھ لیتا ہے جبکہ امریکہ حقیقتا بنی سعود کو شیردار گائے سمجھتے ہیں اور اگر اس کا دودھ خشک ہوجائے تو وہ اسے ذبح کرنے تک تیار ہیں۔
امریکی صدر ٹرمپ کا سعودی عرب کے بارے میں کیا خیال ہے؛ 2014 سے اکتوبر 2018 تک:
1۔ سعودی عرب صرف دعوے کرتا ہے اور لوگوں کو خوفزدہ کرتا ہے اور اس کے پاس کچھ بھی نہیں ہے۔ سعودی وہ بزدل ہیں جن کے پاس پیستہ تو ہے لیکن وہ شجاعت سے عاری ہیں۔ (2014)
2۔ [اے سعودیو!] تم نے دنیا بھر میں دہشت گرد ٹولے بنا لئے ہیں اور ان کو جہل، خونخواری، انسانوں کے سر کاٹنے اور انسانوں کی زندگی تباہ کرنے روشوں کی ترویج کی ہدایت کی ہے، لیکن وہ ہرگز تمہاری حمایت نہیں کریں گے اور تمہارا ساتھ نہیں دیں گے۔ ان کے پاس تمہاری آغوش اور تمہاری حکومت کے سوا کوئی بھی جگہ نہیں ہے۔ چنانچہ وہ آخرکار آئیں گے اور تم پر مسلط ہوجائیں گے اور تمہیں نگل لیں گے۔ (2015)
3۔ بنی سعود دودھ دینے والی شیردار گائے کی طرح ہیں اور جب اس کائے کا دودھ خشک ہوجائے گا اور جب اس کے پاس ڈالر اور سونا نہیں ہوگا، تو ہمیں اسے ذبح کرنا پڑے گا۔ یہ ایک ایسی حقیقت ہے جس سے ہمارے دوست ـ جن کی چوٹی پر قبیلہ بنی سعود ہے ـ نیز ہمارے دشمن، بخوبی واقف ہیں۔ (مئی 2015)
4۔ سعودی عرب ایک صاحب ثروت ملک ہے اور اس کو سیاست اور سلامتی کے شعبے میں امریکی مدد و حمایت حاصل ہے، لہذا اسے اس کے بدلے امریکہ کو پیسہ دینا چاہئے۔
خواہ ہم چاہیں خواہ نہ چاہیں، ہمارے درمیان ایسے لوگ ہیں جو سعودی عرب کی حمایت کرتے ہیں۔ مجھے اس پر کوئی اعتراض نہیں ہے لیکن ہم نے سعودی عرب کی حمایت میں بہت زیادہ اخراجات برداشت کرلئے ہیں، اور اس کے بدلے ہمیں کچھ بھی نہيں ملا ہے، چنانچہ سعودیوں کو چاہئے کہ وہ اپنی سلامتی کے اخراجات ہمیں ادا کریں۔ (اگست 2015)
5۔ اس وقت کوئی بھی سعودی عرب کو نہیں ستا سکتا کیونکہ ہم اس ملک کی حمایت کررہے ہیں لیکن وہ اس حمایت کی منصفانہ قیمت ادا نہیں کررہے ہیں۔ (اپریل 2016)
6۔ میں نے سعودی بادشاہ سے کہا: اے بادشاہ! ممکن ہے کہ تم اپنے طیاروں تک کی حفاظت نہ کرسکو، کیونکہ انہیں ہماری حمایت کے بغیر، مار گرایا جائے گا؛ لیکن ہمارے ساتھ ہو تو مکمل طور پر محفوظ ہو، لیکن اس کے بدلے ہمیں جو کچھ وصول کرنا چاہئے وہ ہمیں نہیں مل رہا ہے۔ (ورجینیا اکتوبر 2018)
7۔ ہم سعودی عرب کی حمایت کرتے ہیں، آپ کہیں گے کہ وہ تو مالدار ہیں، اور میں شاہ سلمان سے محبت کرتا ہوں، لیکن میں نے ان سے کہا: اے بادشاہ! ہم تمہاری حمایت کرتے ہیں، شاید تم ہماری حمایت کے بغیر دو ہفتے بھی جی نہ سکو، چنانچہ تمہیں ہماری حمایت کی قیمت ادا کرنا پڑے گی۔ (میسیسیپی اکتوبر 2018)
۔۔۔۔
110


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*

Arba'een
Mourining of Imam Hossein
haj 2018
We are All Zakzaky
telegram