یمن کے مظلوم عوام کے لیے انسان دوستانہ امداد رسانی کرنے والے مخیرین کی میٹنگ

محسن رضائی: یمن میں ہیضہ کی بیماری اسرائیلی بموں سے پھیلی ہے/ اختری: ہزاروں بچوں کی جانیں بچانا ہمارا فرض ہے

  • News Code : 845043
  • Source : ابنا خصوصی
Brief

یمن کے مظلوم عوام کے لیے انسان دوستانہ امداد رسانی کرنے والے مخیرین نے اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے مرکزی دفتر میں ایک میٹنگ کر کے امداد رسانی کے طریقہ کار پر غور و خوض کیا۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ یمن کے مظلوم عوام کے لیے انسان دوستانہ امداد رسانی کرنے والے مخیرین نے اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے مرکزی دفتر میں ایک میٹنگ کر کے امداد رسانی کے طریقہ کار پر غور و خوض کیا۔
اس میٹنگ میں اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل حجۃ الاسلام و المسلمین محمد حسن اختری، تشخیص مصلحت نظام کونسل کے سیکرٹری جنرل ڈاکٹر محسن رضائی اور امام صادق (ع) فلاحی ادارے کے سربراہ محمود لولاچیان کے علاوہ دیگر مخیرین حضرات بھی موجود تھے۔
میٹنگ میں اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل نے یمن کے عوام کی مدد کرنے والے مخیر حضرات اور اداروں کا شکریہ ادا کیا اور انہیں تاکید کی کہ یمن کے مظلوم عوام سعودی عرب کی طرف سے جاری جنگ کی وجہ سے سخت مشکلات سے دوچار ہیں ہیضہ کی بیماری کی وجہ سے ہزاروں بچوں کی جانیں خطرے میں ہیں جن کو بچانا ہمارا فرض ہے۔
تشخیص مصلحت نظام کونسل کے سیکرٹری جنرل نے یمن کے بحران کے حوالے سے کہا کہ فلسطین میں ۷۰ سال سے جنگ جاری ہے لیکن جتنا نقصان یمن کو اس دو تین سالہ جنگ میں ہو چکا ہے وہ فلسطین سے کہیں زیادہ ہے یمن کی مظلومیت فلسطین سے قابل موازنہ نہیں ہے اس لیے کہ جب فلسطین کے کسی خطے میں کوئی حادثہ پیش آتا ہے تو پوری دنیا باخبر ہوتی ہے اور اسرائیل کے خلاف مظاہرے ہوتے ہیں لیکن یمن میں کیا ہو رہا ہے دنیا کو خبر ہی نہیں اور نہ کوئی آل سعود کے خلاف صدائے احتجاج بلند کر رہا ہے۔
ڈاکٹر رضائی نے کہا کہ ایک جانب سے یمن پر اقتصادی اور معیشتی محاصرہ ہے اور کوئی باآسانی یمن کے عوام کو امداد فراہم نہیں کر سکتا اور دوسری طرف یمن میں وبا اور ہیضہ کی بیماری ہزاروں انسانوں کی جانوں کو خطرے میں ڈالے ہوئے ہے جو یقینا اسرائیل کے بموں کی وجہ سے پھیلی ہے جو اسرائیلی بم سعودیہ نے اس ملک پر استعمال کئے ہیں۔
انہوں نے تاکید کی کہ اس وقت تمام مسلمانوں کا فریضہ ہے کہ یمن کی مدد کے لیے آگے بڑھیں اور آل سعود پر دباؤ ڈالیں تاکہ یمن پر جاری معیشتی محاصرہ ہٹایا جائے اور اس ملک کے مظلوم عوام تک اشیائے خورد و نوش اور دوائیں پہنچائی جائیں۔

واضح رہے کہ یمن میں پھیلی ہیضے کی بیماری اور ہزاروں بچوں کی جانوں کو اس بیماری سے بچانے کی غرض سے تاہم اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی نے خیر افراد اور اداروں سے متعدد میٹنگیں کی ہیں اور ان سے امداد وصول کرنے کے بعد یمن کے مظلوم عوام تک پہنچانے کی کوشش کی ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۴۲

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۴۲

یمن کے عوام کو امداد رسانی کرنے والے مخیرین سے میٹنگ
محسن رضائی: یمن میں وبا ممکن ہے اسرائیل کے بموں سے پھیلی ہو
اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ یمن کے مظلوم عوام کو انسان دوستانہ امداد رسانی کرنے والے مخیرین نے اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے مرکزی دفتر میں ایک میٹنگ کر کے امداد رسانی کے طریقہ کار کے حوالے سے گفتگو کی۔
اس میٹنگ میں اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل حجۃ الاسلام و المسلمین محمد حسن اختری، تشخیص مصلحت نظام کونسل کے سیکرٹری جنرل ڈاکٹر محسن رضائی اور امام صادق (ع) فلاحی ادارے کے سربراہ محمود لولاچیان کے علاوہ دیگر مخیرین حضرات بھی موجود تھے۔
میٹنگ میں اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل نے یمن کے عوام کی مدد کرنے والے مخیر حضرات اور اداروں کا شکریہ ادا کیا اور انہیں تاکید کی کہ یمن کے مظلوم عوام سعودی عرب کی طرف سے جاری جنگ کی وجہ سے سخت مشکلات سے دوچار ہیں وبا کی بیماری کی وجہ سے ہزاروں بچوں کی جانیں خطرے میں ہیں جن کو بچانا ہمارا فرض ہے۔
تشخیص مصلحت نظام کونسل کے سیکرٹری جنرل نے یمن کے بحران کے حوالے سے کہا کہ فلسطین میں ۷۰ سال سے جنگ جاری ہے لیکن جتنا نقصان یمن کو اس دو تین سالہ جنگ میں ہو چکا ہے وہ فلسطین سے قابل موازنہ نہیں ہے یمن کی مظلومیت فلسطین سے قابل موازنہ نہیں ہے اس لیے کہ جب فلسطین کے کسی خطے میں کوئی حادثہ پیش آتا ہے تو پوری دنیا باخبر ہوتی ہے اسرائیل کے خلاف مظاہرے ہوتے ہیں لیکن یمن میں کیا ہو رہا ہے دنیا کو خبر ہی نہیں اور کوئی آل سعود کے خلاف صدائے احتجاج بلند نہیں کر رہا ہے۔
ڈاکٹر رضائی نے کہا کہ ایک جانب سے یمن پر معیشتی محاصرہ ہے اور کوئی باآسانی یمن کے عوام کو امداد فراہم نہیں کر سکتا اور دوسری طرف یمن میں وبا اور ہیضہ کی بیماری پھیل چکی ہے جو یقینا اسرائیل کے بموں کی وجہ سے ہے جو سعودیہ نے اس ملک پر استعمال کئے ہیں۔
انہوں نے تاکید کی کہ اس وقت تمام مسلمانوں کا فریضہ ہے کہ یمن کی مدد کے لیے آگے بڑھیں اور آل سعود پر دباؤ ڈالیں تاکہ یمن پر جاری معیشتی محاصرہ ہٹایا جائے اور اس ملک کے مظلوم عوام تک اشیائے خورد و نوش اور دوائیں پہنچائی جائیں۔


متعلقہ مضامین

اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*

Mourining of Imam Hossein
پیام امام خامنه ای به مسلمانان جهان به مناسبت حج 2016
We are All Zakzaky
telegram