عماد مغنیہ کا نام دشمن کے لیے عرب و دبدبہ کا باعث تھا: جنرل قاسم سلیمانی

عماد مغنیہ کا نام دشمن کے لیے عرب و دبدبہ کا باعث تھا: جنرل قاسم سلیمانی

قاسم سلیمانی نے کہا کہ "عماد مغنیہ" کا نام دشمن کے لئے رعب و دبدبہ اور وحشت کا باعث جبکہ دوستوں کے لئے شوق و نشاط کا موجب تھا۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کی بیت المقدس بریگیڈ کے سربراہ جنرل قاسم سلیمانی نے شہید عماد مغنیہ کی شہادت کی دسویں برسی کے موقع پر شہید سے اظہار عقیدت کرتے ہوئے کہا کہ شہید عماد مغنیہ کا نام ، دشمن کے لئے رعب و دبدبہ اور وحشت کا باعث  اور دوستوں کے لئے شوق و نشاط کا موجب تھا۔

جنرل سلیمانی نے کہا کہ شہید عماد مغنیہ نے پہلے اپنا نام مختار انتخاب کیا لیکن بعد میں انھوں نے اپنا نام رضوان رکھ لیا اور سرانجام رضوان الہی سے ملحق ہوگئے۔

واضح رہے کہ شہید عماد مغنیہ کا شمار حزب اللہ کے بہادر اور جاں بہ کف سپوتوں میں ہوتا تھا اور ان کی بہادری، شجاعت، دلیری اور چند خطرناک آپریشنز میں کامیابی کے بعد انہیں حزب اللہ کی بلند پایہ شخصیات کی حفاظت کرنے والے گارڈز کا کمانڈر بنا دیا گیا۔

شہید عماد مغنیہ کو گیارہ فروری 2009 کو شام کے علاقے کفر سوسہ میں نشانہ بنایا گیا۔

موساد کا ایک اعلیٰ افسر یوسی کوھن جسے دہشتگردانہ حملوں کا ماسٹر مائنڈ کہا جاتا ہے، شہید عماد مغنیہ کو قتل کرنے والی ٹیم کا انچارج تھا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۴۲


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*

پیام امام خامنه ای به مسلمانان جهان به مناسبت حج 2016
We are All Zakzaky
telegram