عراق کے حالیہ واقعات امریکی پالیسیوں کا شاخسانہ تھے: بہرام قاسمی

عراق کے حالیہ واقعات امریکی پالیسیوں کا شاخسانہ تھے: بہرام قاسمی

اسلامی جمہوریہ ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان بہرام قاسمی نے عراقی شہر بصرہ کی حالیہ صورت حال کے ردعمل میں وائٹ ہاؤس کے بیان کو اشتعال انگیز قرار دیا ہے۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ تہران میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے وزارت خارجہ کے ترجمان بہرام قاسمی نے کہا کہ بصرہ کی بدامنی کے واقعات پر وائٹ ہاؤس کی رپورٹ مضحکہ خیز اور قابل مذمت ہے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ نے ہمیشہ جارحیت، مداخلت اور کشیدگی کی  پالیسی کے ذریعے خطے میں بدامنی پیدا کی ہے اور اس علاقے میں پائی جانے والی کشیدگی اور تناؤ کا اصل ذمہ دار امریکہ ہی ہے۔
ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان کا کہنا تھا کہ عراق میں امریکی پالیسی کا نتیجہ، بدامنی اور عدم استحکام کے سوا اور کچھ نہیں نکلا، اور گزشتہ دنوں بدامنی کے واقعات بالخصوص بصرہ میں ایرانی قونصل خانے کو نذر آتش کیا جانا بھی امریکی پالیسیوں کا ہی نتیجہ ہے۔
انہوں نے کہا کہ دنیا کے بہت سے ممالک اور روشن خیال طبقہ، خطے میں کشیدگی اور عدم استحکام میں امریکی کردار سے بخوبی واقف ہے۔
ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ امریکہ کو جان لینا چاہیے کہ وہ من گھڑت دعؤوں اور پروپیگنڈے کے ذریعے خطے میں اپنی غلط لاحاصل اور عدم استحکام پھیلانے والی پالیسیوں کی پردہ پوشی نہیں کر سکتا۔
 بہرام قاسمی نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کی ہمیشہ ہی یہ اصولی پالیسی رہی ہے کہ وہ علاقائی ممالک میں امن و سلامتی اور استحکام کی حمایت کرتا ہے۔
انھوں نے کہا کہ ایران نے ہمیشہ ایک پُرامن اور مستحکم عراق کو ترجیح دی ہے لہذا تہران بغداد تعلقات خراب کرنے کی غرض سے تیسرے فریق کی سازشیں کبھی کامیاب نہیں ہوں گی۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۴۲


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*

haj 2018
We are All Zakzaky
telegram