بیرونی مداخلت سے علاقے میں عدم استحکام اور بدامنی مزید بڑھے گی: تہران سیکورٹی کانفرنس

بیرونی مداخلت سے علاقے میں عدم استحکام اور بدامنی مزید بڑھے گی: تہران سیکورٹی کانفرنس

تہران سیکورٹی کانفرنس کے اعلامیہ کے مطابق، خطی ممالک کے باہمی تعاون کے ذریعے مغربی ایشیا میں مشترکہ اور جامع سلامتی کا قیام، خطے میں پائیدار امن اور استحکام کو برقرار رکھنے میں مدد ملے گی جبکہ غیرعلاقائی طاقتوں کی مداخلت خطے میں بدامنی کی وجہ ہے.

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ ایرانی دارالحکومت تہران میں دوسری عالمی سیکورٹی کانفرنس کا اختتام ہوگیا جس میں شرکا نے متفقہ طور پر کہا ہے کہ بیرونی مداخلت نہ صرف سلامتی کے لئے مددگار نہیں ہے بلکہ اس سے خطے میں عدم استحکام اور بدامنی میں مزید اضافہ ہوگا.

تفصیلات کے مطابق، تہران سیکورٹی کانفرنس کی اختتامی تقریب میں شرکا کی جانب سے مشترکہ اعلامیہ کو منظور کرلیا گیا.

کانفرنس کے سیکریٹری 'سید جلال دہقانی فیرزآبادی' نے متفقہ اعلامیے کو پڑھ کر سنایا.

اعلامیہ کے مطابق، شرکا نے مغربی ایشیائی خطے کے حساس اور نازک حالات کے بارے میں کہا کہ باوجود اس کے کہ خطی ممالک کے باہمی تعاون سے داعش اور دیگر تکفیری گروہوں کا خطرہ کم ہوگیا ہے لیکن امریکہ کی گمراہ کن پالیسی کی وجہ سے علاقائی سلامتی کو نئے خطرات کا سامنا ہے.

خطے میں مہلک ھتھیاروں کی فراہمی، بیرونی طاقتوں کی مداخلت، غلط طرز کی حکمرانی، انتہا پسندی اور دہشتگردی، سائبر دہشت گردی، معیشتی حالات کی خرابی، ماحولیاتی مسائل ان خطرات میں شامل ہیں جن سے نمٹنے کے لئے مغربی ایشیا کے ممالک کو ایک جامع سیکورٹی کی ضرورت ہے.

تہران سیکورٹی کانفرنس کے اعلامیہ کے مطابق، خطی ممالک کے باہمی تعاون کے ذریعے مغربی ایشیا میں مشترکہ اور جامع سلامتی کا قیام، خطے میں پائیدار امن اور استحکام کو برقرار رکھنے میں مدد ملے گی جبکہ غیرعلاقائی طاقتوں کی مداخلت خطے میں بدامنی کی وجہ ہے.

کانفرنس کے شرکا نے فلسطینی قوم کے قانونی حقوق کی حمایت پر زور دیا.

انہوں نے خطے میں دہشتگردی کے خلاف جنگ میں ایران کی قابل قدر کوششوں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ایران پڑوسی ممالک کی سلامتی کو اپنی سلامتی سمجھتا اور اس حوالے سے خطی ممالک کے ساتھ باہمی تعاون کے ذریعے پائیدار سیکورٹی کو برقرار رکھنا چاہتا ہے.

اس بیان مزید کہا کہ مغربی ایشیا کی سلامتی کو برقرار رکھنا، صرف خطی ممالک کے درمیان باہمی مذاکرات کے طریقے سے ممکن ہے.

تفصیلات کے مطابق، 'تہران کی سیکورٹی' کے عنوان سے دوسری کانفرنس کا آج بروز پیر ایرانی دارالحکومت تہران میں انعقاد کیا جس میں ایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف کے علاوہ ایران کے اسٹریٹجک خارجہ روابط کونسل کے سربراہ 'کمال خرازی' اور 80 غیر ملکی میہمانوں نے شرکت کی.

تہران سیکورٹی کانفرنس کا عنوان احترام، اعتماد، بات چیت، باہمی تعاون، سلامتی اور اجتماعی خوشحالی تھا. جس کا مقصد مغربی ایشیا میں خطے کی سلامتی، چیلنجز اور نئے حالات پر تبادلہ خیال کرنا تھا.

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۴۲


اپنی رائے بھیجیں

آپ کا ای میل شائع نہیں ہو گا۔ * والی خالی جگہوں کو مکمل کیجیے

*

پیام امام خامنه ای به مسلمانان جهان به مناسبت حج 2016
We are All Zakzaky
telegram